حکومت دہلی کی اپیلوں پر آئندہ ہفتہ سماعت

 سپریم کورٹ نے آج آمادگی ظاہر کی کہ وہ مختلف اختیارات کے تعلق سے حکومت دہلی کی اپیلوں کی سماعت آئندہ ہفتہ کرے گی۔ سپریم کورٹ کی دستوری بنچ نے کہاتھا کہ دہلی میں لیفٹننٹ گورنر کو فیصلے کرنے کا آزادانہ اختیارحاصل نہیں ہے۔ چیف جسٹس دیپک مشرا کی زیرقیادت 5 رکنی دستوری بنچ نے حال میں قومی دارالحکومت میں حکمرانی کا وسیع پیمانہ وضع کیاتھا جہاں مرکز اور حکومت دہلی کے درمیان 2014 میں عام آدمی پارٹی کے برسرِ اقتدار آنے کے بعد سے اقتدار کی رسہ کشی جاری ہے۔ بنچ نے کہا تھا کہ حکومت دہلی کے جاری کردہ مختلف اعلامیوں سے ایک موزوں ، چھوٹی بنچ نمٹے گی۔ سپریم کورٹ کے فیصلہ کے بعد بھی سرکاری محکمات کے مسئلہ پر تعطل برقرار ہے۔ بنچ نے حکومت دہلی کے وکیل راہول مہتا سے کہا کہ آئندہ ہفتہ کسی وقت سماعت ہوگی۔ سپریم کورٹ نے 4 جولائی کی رولنگ میں چیف منسٹر دہلی اروند کجریوال کا موقف درست ثابت کیاتھا۔ اروند کجریوال کا ہمیشہ الزام ہے رہا کہ ایل جی انہیں حکومت کرنے نہیں دے رہے ہیں۔ 2لیفٹننٹ گورنرس موجودہ انیل بائجل اور سابقہ نجیب جنگ سے کجریوال کا ٹکراؤ رہا۔

جواب چھوڑیں