فوجداری قانون ترمیمی بل مانسون اجلاس میں پیش ہوگا

پارلیمنٹ کے 18جولائی سے شروع ہونے والے مانسون اجلاس میں فوجداری قانون(ترمیم) بل 2018ء پیش ہوگا جس کی رو سے 12 سال سے کم عمرکی لڑکیوں کی عصمت ریزی کے خاطیوں کو سخت سزا بشمول سزائے موت دی جائے گی۔ ترمیمی بل پارلیمنٹ کی منظوری کے بعد فوجداری قانون (ترمیم) آرڈیننس (21اپریل) کی جگہ لے گا۔ یہ آرڈیننس جموںوکشمیر کے کٹھوعہ میں ایک کمسن لڑکی کی عصمت ریزی وقتل اور اترپردیش کے اناؤ میں ایک عورت کی عصمت ریزی کے بعد جاری ہوا تھا۔ وزارتِ داخلہ نے بل کا مسودہ تیارکیا ہے اورتوقع ہے کہ مرکزی کابینہ اسے جلد منظوری دے گی۔ وزارتِ داخلہ کے ایک عہدیدار نے یہ بات بتائی۔

جواب چھوڑیں