نواک جاکوویچ ومبلڈن کوارٹر فائنلس میں داخل

تین دفعہ کے ومبلڈن چمپئن نواک جاکوویچ نے چوٹی کے روسی کھلاڑی کارن کچھا نوف کو 6-4،6-2،6-2 سے شکست دیتے ہوئے دسویں مرتبہ گرانڈ سلام کے کوارٹر فائنل میں داخل ہوگئے ۔سرب کھلاڑی نے پیر کے دن صرف 12 بلاجبر غلطیاں کیں اور انہوں نے 29 ونرس لگائے جس سے کچا نوف آل انگلینڈ کلب میں ناکام رہے جاکوویچ جن کو ٹورنمنٹ میں 112ویں سیڈدیا گیا ہے ۔آئندہ مقابلہ جاپان کے کی نشکوری سے ہوگا جنہوں نے آرنسٹ گلبس کو7-6(10),6-1 4-6,7-6(5) سے صبر آزما مقابلہ میں شکست دے دی یہ مقابلہ تین گھنٹے 28 منٹ تک جاری رہا ۔کامیابی کے بعد جاکوویچ نے کہا کہ میں اس پر بے حد خوش ہوں انہوں بریک کے ساتھ شروعات کی اور ایک دو شاندار شاٹس بھی لگائے لیکن میں انہیں بریک کرسکا اور پھر سٹ واپس حاصل کرلیا اور سرویس بھی واپس حاصل کرنے میں کامیاب رہا دسویں مرتبہ ومبلڈن کوارٹر فائنل میں داخل ہوتے ہوئے جاکوویچ کا انڈی مورے کے ساتھ مقابلہ برابر ہے ان کے بعد راجر فیڈرر(16) جیمی کونرس (14) اور بورس بیکر (11) سے پیچھے ہیں ۔اے ایف پی کے بموجب کی نشکوری جاپان کے ایسے پہلے کھلاڑی بن گئے ہیں جنہوں نے 23 سالوں کے دوران ومبلڈن کوارٹر فائنلس تک رسائی حاصل کی ہے اور انہوں نے یہ پیش قیاسی کی ہے کہ جاکوویچ کے ساتھ مقابلہ کے بعد آخری 4 میں داخل ہوجائے گا۔ 28 سالہ نشکوری نے اپنے زخموں کے مندمل ہونے کے بعد پہلے آل انگلینڈ کلب کوارٹر فائنلس میں اس وقت رسائی حاصل کرلی جب انہوں نے لاتویا کے کوالیفائر ارنسٹ گلبس کے خلاف 4-6,7-6(7/5)7-6(12-10)6-1 سے کامیابی حاصل کی۔ وہ 1995 میں شوزو ماٹسو کے بعد کوارٹر فائنلس میں پہنچنے والے پہلے جاپانی کھلاڑی بن گئے۔ جاپانی کھلاڑی پہلے ہی جاریہ سال سابق عالمی نمبر ایک کے ہاتھوں 2 مرتبہ شکست کھاچکے ہیں انہیں میڈرڈ اور روم میں شکست اٹھانی پڑی تھی۔ اگرچیکہ دونوں کے درمیان گراس پر مقابلہ کرنا نہیں پڑا لیکن نشکوری اب بھی ہیمسٹرنگ کا شکار ہے۔ اطلاع کے مطابق انہوں نے سرب کھلاڑی کے خلاف 2 بار 1914 میں کامیاب رہے۔ ایک مرتبہ یو ایس اوپن میں سیمی فائنلس میں ان کی کامیابی یادگار ہے۔

جواب چھوڑیں