نواز شریف اور دختر کے طیارہ کی آمد میں تاخیر

سابق وزیراعظم اور پاکستان مسلم لیگ (این) کے قائد میاں نواز شریف کی ابوظہبی سے لاہور آنے والی پرواز تاخیر کا شکار ہوگئی ہے جبکہ پولیس اور رینجرز نے ان کے استقبال کے لیے پنجاب کے دیگر شہروں سے آنے والے قافلوں کو لاہور میں داخل ہونے سے روک دیا ہے۔ایون فیلڈ ریفرنس میں سزا یافتہ سابق وزیرِ اعظم اور ان کی صاحبزادی مریم نواز جمعہ کی صبح لندن سے ابوظہبی پہنچے تھے جہاں سے انہیں متحدہ عرب امارات کی سرکاری ایرلائنز ’’ اتحاد ایر ویز ‘‘ کے ذریعہ جمعہ کی شام لاہور کے علامہ اقبال انٹرنیشنل ایرپورٹ پہنچنا تھاتاہم نواز شریف کے ساتھ موجود صحافیوں کا کہنا ہے کہ پرواز ڈیڑھ سے دو گھنٹے تاخیر کا شکار ہوگئی ہے اور اب امکان ہے کہ وہ رات 8 بجے کے لگ بھگ لاہور پہنچے گی۔نواز شریف کی آمد کے موقع پر مسلم لیگ (این) کے کارکنوں کو ایرپورٹ جانے سے روکنے کے لئے پنجاب کی نگران حکومت نے لاہور شہر کے 50 مرکزی مقامات اور شاہراہوں کو کنٹینر لگا کر بند کردیا ہے۔شہر کے بیشتر علاقوں میں موبائل فون سروس بھی بند ہے۔پاکستان مسلم لیگ (این) کے کئی رہنمائوں اور کارکنوں نے ٹویٹر پر دعویٰ کیا ہے کہ مختلف شہروں سے آنے والے این لیگ کے کارکنوں کے قافلوں کو مختلف مقامات پر روک لیا گیا ہے اور انہیں لاہور کی جانب نہیں آنے دیا جارہا ہے۔کئی قافلوں کے شرکا کو حراست میں لئے جانے کی بھی اطلاعات ہیں۔میڈیا اطلاعات کے مطابق نواز شریف کے استقبال کو روکنے کے لئے نگران حکومت نے لاہور سے تعلق رکھنے والے پاکستان مسلم لیگ (این) کے کئی رہنمائوں کو نظر بند کرنے احکامات بھی جاری کئے ہیں۔مسلم لیگ (این) کے کارکنوں کے خلاف پنجاب پولیس کا کریک ڈاؤن جمعرات اور جمعہ کی درمیانی شب بھی جاری رہا جس کے دوران پولیس نے لاہور اور اس کے نواحی اضلاع کے کئی شہروں اور قصبوں سے این لیگ کے مزید درجنوں کارکنوں کو حراست میں لے لیا ہے لیکن گرفتاریوں اور انتظامیہ کی جانب سے اجازت نہ دیئے جانے کے باوجود سابق وزیرِاعلیٰ پنجاب اور مسلم لیگ (این) کے صدر شہباز شریف نے اعلان کیا ہے کہ وہ نواز شریف کے استقبال کے لئے ہر صورت ایرپورٹ جائیں گے لیگن رہنمائوں نے کارکنوں کو لاہور کی لوہاری مسجد جمع ہونے کی کال دی تھی جہاں سے پارٹی رہنمائوں کی قیادت میں مرکزی قافلہ نمازِ جمعہ کے بعد ایرپورٹ کی جانب روانہ ہوگیا ہے۔

جواب چھوڑیں