بی جے پی ، ریاست میں ابتری پیدا کرنے کا اعتراف کرے :عمر عبداللہ

یہ الزام عائد کرتے ہوئے کہ بی جے پی حکومت کے تحت عسکریت پسندی کے ہر پیمانے پر بدترین رجحانات ظاہر ہوئے ہیں ، سابق چیف منسٹر جموں و کشمیر عمر عبداللہ نے بھگوا جماعت کے قائدین سے کہا کہ وہ دیانت دار بنیں اور اس بات کا اعتراف کریں کہ انہوں نے 2015ء کے بعد سے ریاست میں ابتری پیدا کی ہے ۔ نیشنل کانفرنس کے نائب صدر نے ٹوئٹر پر کہا بی جے پی والے کم از کم دیانت دار بنیں اور اس بات کا اعتراف کریں کہ آپ نے 2015ء کے بعد سے ریاست میں زبردست ابتری پیدا کی ہے ۔ اس حکومت کے تحت عسکریت پسندی کے ہر پیمانے پر بدترین رجحانات ظاہر ہوئے ہیں۔ عمر عبداللہ مرکزی مملکتی وزیر داخلہ کرن رجیجو کے ایک ٹوئٹر پیام کا حوالہ دے رہے تھے ، جس میں کہا گیا تھا کہ یہ کہنا انتہائی بدبختانہ ہے کہ جموں و کشمیر میں تمام مسائل کے لیے بی جے پی ذمہ دار ہے۔ ہماری حکومت ، حل تلاش کرنے کی کوشش کررہی ہے اور یہ کوششیں حقیقی ہیں ۔ واضح رہے کہ عام انتخابات میں کوئی بھی جماعت 87 رکنی ایوان میں 44 نشستوں کا جادوئی عدد حاصل نہیں کرسکی تھی ، جس کے بعد 2015ء میں پی ڈی پی اور بی جے پی نے مفتی محمد سعید کی زیرقیادت ایک مخلوط حکومت تشکیل دی تھی۔ مفتی سعید کے انتقال کے بعد ان کی دختر محبوبہ مفتی ، بی جے پی کی تائید سے چیف منسٹر بنی تھیں ۔ بہرحال زائد از تین سال کے بعد گذشتہ ماہ بی جے پی ان کی حمایت سے دستبردار ہوگئی اور محبوبہ مفتی کو استعفیٰ دینا پڑا۔ بی جے پی نے الزام عائد کیا تھا کہ حکومت ، جموں اور لداخ کو نظرانداز کررہی ہے ۔ بہرحال مخلوط حکومت کے دور میں تشدد میں کافی اضافہ ہوا اور سینکڑوں نوجوانوں نے جن میں بیشتر کا تعلق جنوبی کشمیر سے ہے ، عسکریت پسند تنظیموں میں شمولیت اختیار کی ۔ سیکورٹی فورسس کی کارروائی بالخصوص انکاؤنٹر کے مقامات کے قریب میں نوجوانوں کی ہلاکت کے واقعات میں بھی پی ڈی پی ۔ بی جے پی کے دورِ اقتدار میں اضافہ درج کیا گیا ۔ محبوبہ مفتی نے حال ہی میں مرکز کو انتباہ دیا تھا کہ پی ڈی پی کو توڑنے کی کوئی بھی کوشش خطرناک ثابت ہوگی اور (حزب المجاہدین کے صدر) سید صلاح الدین اور (جموں و کشمیر لبریشن فرنٹ کے صدرنشین) محمد یٰسین ملک جیسے عسکریت پسند دوبارہ پیدا ہوںگے۔ انہوں نے الزام عائد کیا تھا کہ وہ پی ڈی پی کے چار ارکانِ اسمبلی کی ان کی قیادت کے خلاف بغاوت اور ریاست میں بی جے پی کے ساتھ مل کر حکومت تشکیل دینے کے برسرعام اعلان کی بی جے پی تائید کررہی ہے ۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *