ہندوستان اور انگلینڈ کے درمیان آج تیسرا ونڈے

ہندوستان اور انگلینڈ کے درمیان تیسرا اور آخری ونڈے کل کھیلا جائے گا۔ 3 میاچس کی سیریز اس وقت 1-1 سے مساوی ہے اس طرح کل کھیلا جانے والا میاچ دونوں ٹیمیں کیلئے کافی اہمیت کا حامل ہے۔ پہلے میاچ میں ہندوستانی ٹیم نے 8 وکٹوں سے بہ آسانی جیت حاصل کی تھی تاہم انگلش ٹیم نے دوسرے مقابلہ میں شاندار واپسی کرتے ہوئے نہ صرف جیت حاصل کی بلکہ سیریز بھی مساوی کردی۔ گذشتہ مقابلہ انگلش ٹیم کی کامیابی میں ٹسٹ کپتان جوئے روٹ کا اہم رول رہا جنہوں نے 8 چوکوں اور ایک چھکے کی مدد سے کیریر کی 12 ویں سنچری اسکور کی تھی۔ روٹ 3 میاچس کی ٹی ٹوئنٹی سیریز اور پہلے ونڈے میں ناکام رہے تھے۔ اس طرح 5 میاچس کی ٹسٹ سیریز سے قبل ان کا فام بحال ہونا میزبان ٹیم کیلئے کافی اہم ثابت ہوگا۔ تاہم کل ہونے والے مقابلہ میں آل رائونڈر بن اسٹوکس‘ جانی بیرسٹو‘ جیسن رائے اور معین علی کو مزید بہتر بیاٹنگ کرنی ہوگی۔ لارڈز پر کھیلے گئے دوسرے ونڈے میں معین علی اور عادل راشد نے بھی شاندار بولنگ کے ذریعہ ٹیم کی کامیابی میں اہم رول ادا کیاتھا۔ آل رائونڈر ڈیویڈ ولی سے کپتان کو کل بھی ایک اور شاندار مظاہرہ کی توقع رہے گی جنہوں نے گذشتہ مقابلہ میں دھواں بھار بیاٹنگ کرتے ہوئے نصف سنچری اسکور کرنے کے بعد شکھر دھون کی قیمتی وکٹ بھی حاصل کی تھی۔ دوسری جانب ہندوستانی ٹیم کی نگاہیں ٹی ٹوئنٹی کے بعد ونڈے سیریز میں بھی کامیابی پر مرکوز ہیں ۔ لیکن اس کیلئے خاص طورپر مڈل آرڈر میں سابق کپتان مہیندر سنگھ دھونی‘ ہاردیک پانڈیا اور لوکیش راہول کو مزید بہتر کھیل پیش کرنا ہوگا۔ دھونی گذشتہ مقابلہ میں اپنی شناخت کے مطابق کھیل پیش نہیں کرپائے تھے جس کے بعد ان پر تنقیدیں بھی کی گئی تھیں تاہم کپتان کوہلی نے ان کا بھرپور دفاع کیا۔ بولنگ کے شعبہ میں اسپنرس خاص طورپر کلدیپ یادو انگلش ٹیم کیلئے سردرد بنے ہوئے ہیں۔ کلدیپ یادو نے 2 ونڈے میاچس میں 9 وکٹس حاصل کئے ہیں جبکہ چاہال بھی بہتر ثابت ہورہے ہیں۔ بھونیشور کمار‘ بمراہ اور محمد سمیع کی غیر موجودگی میں سدھارتھ کول‘ اومیش یادو اور ہاردیک پانڈیا توقعات پر پورا اترنے میں ناکام ثابت ہوئے ہیں۔ بہرحال کل دونوں ٹیموں کے درمیان ایک دلچسپ مقابلہ دیکھنے کو مل سکتاہے جو ہندوستانی معیاری وقت کے مطابق شام 5 بجے سے کھیلا جائے گا۔

جواب چھوڑیں