ورلڈکپ سے قبل اوڈی آئی میں بہترتوازن قائم کرنے کی ضرورت ہے:کوہلی

ہندوستان کواوڈی آئی ٹیم میں صحیح بیالنس قائم کرنے کی ضرورت ہے اورمل جل کر آئندہ سال ورلڈ کپ سے قبل کام کرنا ہوگا۔یہ بات کپتان ویراٹ کوہلی نے 3میاچس کی سیریز میں1-2سے اپنی ٹیم کی شکست کے بعدکہی۔ اس قسم کے گیمس ہم کویہ بتاتے ہیںکہ ہمیں ورلڈکپ کے لئے بہتری لانے کی ضرورت ہے۔ ہمیں ٹیم میں بہترین توازن قائم کرنا ہوگا۔ اوراس کے لئے ہمیں ورلڈکپ سے قبل مل جل کر کام کرنا پڑے گا ہم صرف کسی ایک مہارت پر اکتفا نہیں کرسکتے ۔ ہمیں تمام شعبوں میں بہتر مظاہرہ کرنا چاہئے۔ یہ بات کوہلی نے کل سیریز کے فیصلہ کن میاچ میں8وکٹس سے شکست کے بعد کہی۔ ہندوستان کی بیاٹنگ کوچوٹی کا قرار دیا جاتاہے جوکہ مڈل آرڈر میں کافی مضبوط ہے جس کا ثبوت تیسرے اور آخری اوڈی آئی میں ملا جب روہت شرما2 پرآوٹ ہونے کے بعد شیکھر دھون44 ویراٹ کوہلی71پر آوٹ ہوئے۔ ہندوستان31 ویں اوور میں4وکٹ پر156پرتھالیکن آخری 20اوورس میں وہ صرف 100رن ہی بناسکا اورہم کبھی بھی مطلوبہ نشانہ تک رن بنانے کے موقف میں نہیں تھے۔ ہمیں 25تا 30 رنوںکی کمی کا سامنارہا جبکہ انگلینڈ کاتمام شعبوںمیں بہترین مظاہرہ رہا اوروہ کامیابی کا مستحق رہا ۔ ہمیں انگلینڈجیسی ٹیم کے خلاف بہتر مظاہرہ کی ضرورت ہے۔پچ دن بھرانتہائی دھیمی رہی جوحیرت انگیز بات ہے اورنئی گیند کے خلاف اچھال نہیں مل رہی تھی ۔ البتہ اسپنرس کے لئے بہتر ثابت ہوئی۔ میں اس سے قبل ایسے پچ نہیں دیکھی۔ بولرس نے بہتر مظاہرہ کیا ۔ بطورخاص اسپنرس نے زیادہ رن نہیں دیئے۔ آخر کار وکٹس حاصل کرلئے۔ کوہلی نے اس بات کا دفاع کیاکہ ٹیم میں اہم میاچ کے دوران تین تبدیلیاں کی گئی۔ دنیش کارتک ، بھونیشورکمار اورشردول ٹھاکر کو کے ایل راہول، اومیش یادو اورسدھارتھ کول کی جگہ لایاگیا۔ہم نے یہ خیال کیاتھاکہ دنیش بہتر مظاہرہ کریںگے لیکن وہ اپنی شروعات کوتبدیل نہیں کرسکے ۔لہذا مجھے بیاٹنگ آرڈر میں تبدیلی پر کوئی افسوس نہیں ہے۔

جواب چھوڑیں