پولیس نے کانگریس کے دھرنا کو ناکام بنادیا۔نیوایم ایل اے کوارٹرپراحتجاجی قائدین کی گرفتاری ورہائی

سٹی پولیس نے چہارشنبہ کوگریٹر حیدرآباد کانگریس کمیٹی کے مہادھرنا کو اس وقت ناکام بنادیاجبکہ کانگریس قائدین ‘نیوایم ایل اے کوارٹرس سے صدردفتر جی ایچ ایم سی کی جانب بڑھ رہے تھے ۔ کانگریس نے شہر میں سڑکوں کی ابترحالت کے خلاف جی ایچ ایم سی کے صدر دفتر کے سامنے دھرنا کا ا علان کیا تھا اور دھرنا کے لئے بلدیہ کے صدردفتر بڑھنے والے کانگریسوں کوپولیس نے آگے جانے سے روک دیا۔ پولیس نے صدر گریٹرحیدرآباد کانگریس کمیٹی انجن کماریادوکے بشمول سینکڑوں کارکنوں کوگرفتار کرتے ہوئے شہر کے مختلف پولیس اسٹیشنوں نارائن گوڑہ ‘ مشیرآباد ‘ بلارم ‘رام گوپال پیٹ ‘گوشہ محل اسٹیڈیم اورنام پلی منتقل کردیا۔انجن کمار اور دیگر کارکنوں کونارائن گوڑہ پولیس اسٹیشن پہنچایا گیاجہاں 4بجے تک محروس رکھنے کے بعد انہیں رہا کردیاگیا۔ صدرٹی پی سی سی اتم کمار ریڈی ‘قائداپوزیشن محمدعلی شبیر ‘ سابق مرکزی وزیر بلرام نائیک ودیگر قائدین نے نارائن گوڑہ پولیس اسٹیشن پہنچ کر انجن کماریادو سے اظہار یگانگت کیااور کانگریس قائدین کی گرفتاریوں کی مذمت کی ۔ بعدازاں میڈیا سے بات کرتے ہوئے انجن کماریادونے دھرنا سے قبل ایک ہزار سے زائد پارٹی کارکنوں کی گرفتاری کی شدید مذمت کی اور کہاکہ کانگریس کارکن شہر کی سڑکوں کی خستہ حالت‘ جگہ جگہ کھدائی ‘نالوں اور ڈرینچ لائن کی عدم صفائی ‘سڑکوں پر گندہ پانی کے بہائو کے خلاف دفتر جی ایچ ایم سی کے روبرو پرامن دھرنا دینا چاہتے تھے لیکن پولیس نے دھرنا سے قبل ہی پارٹی کارکنوں کوگرفتار کرلیا۔ انہوں نے کہاکہ کے سی آر نے حیدرآباد شہر کو سنگاپوراورامریکی شہر ڈلاس کی طرز پر ترقی دینے کے بلندوبانگ دعوے کئے تھے لیکن ایک گھنٹہ کی بارش میں شہر کی سڑکیں جھیل میں تبدیل ہوجاتی ہیں۔ جس کی وجہ سے گھنٹوں ٹریفک جام ہونے سے راہگیروں کو اپنی منزل پر پہنچنے میں دشواریاں پیش آرہی ہیں۔ جی ایچ ایم سی ‘سڑکوں کی حالت کوبہتر بنانے میں ناکام ہوچکی ہے۔ کچرے کی نکاسی ‘سڑکوں کی مرمت کے لئے کئی مرتبہ کمشنر جی ایچ ایم سی سے نمائندگی کی گئی لیکن کوئی اقدام نہیں کیا۔ گرفتار ہونے والوں میں فیروزخان (نامپلی انچارج ) ‘واجدحسین سابق کارپوریٹر‘ راجکمار سابق ڈپٹی مئیر ‘انیل کمار یادو ‘سابق کونسلر محمد شریف اوردیگر قائدین اور سابق کارپوریٹرس بھی شامل ہیں ۔ان کارکنوں نے ٹی آرایس حکومت اورپولیس کیخلاف نعرے بلند کئے ۔

جواب چھوڑیں