مجوزہ ترمیم سے آر ٹی آئی قانون  ناکارہ ہوجائے گا : راہول

کانگریس صدر راہول گاندھی نے اطلاعات کا حق(آر ٹی آئی)قانون میں حکومت کے ذریعہ مجوزہ ترمیم کو ’سچائی پر پردہ پوشی‘ کی کوشش قرار دیتے ہوئے آج کہا کہ اس سے یہ قانون بے کار ہوجائے گا اور لوگوں کو اس کی مخالفت کرنی چاہئے۔ گاندھی نے ٹوئٹر پر ایک پوسٹ منسلک کیا ہے جس میں لکھا ہے’ہر ہندوستان کو سچ جاننے کا حق ہے۔ بی جے پی کا ماننا ہے کہ سچ لوگوں سے چھپانا ضروری ہے اور اقتدار میں موجودلوگوں پر سوال نہیں اٹھانا چاہئے۔ آر ٹی آئی میں مجوزہ تبدیلیوں سے یہ قانون بے کار ہوجائے گا۔ہر ہندوستانی کو اس کی مخالفت کرنی چاہئے۔‘کانگریس صدر نے یہ پوسٹ ایسے وقت کیا ہے جب حکومت پارلیمنٹ کے موجودہ مانسون اجلاس میں آر ٹی آئی قانون میں ترمیم کے لئے بل لانے والی ہے۔آر ٹی آئی کارکنان بھی قانون میں ترمیم کی مخالفت کررہے ہیں۔ ان کا کہنا ہے کہ ابھی چیف انفارمیشن کمشنر اور انفارمیشن کمشنروں کی مدت کار پانچ سال طے ہے۔ ترمیمی بل میں اسے بدل کر ان کی مدت کار جب تک حکومت چاہے کرنے کی تجویز ہے۔ اسی طرح کی تبدیلی ریاستی انفارمیشن کمشنروں کے مدت کار میں بھی کرنے کا التزام ہے۔اس کے علاوہ چیف انفارمیشن کمشنر اور ریاستی انفارمیشن کمشنروں کی تنخواہیں اور بھتے طے کرنے کا اختیار بھی مرکزی حکومت کو دینے کا التزام ترمیمی بل میں ہے۔ فی الحال ان کی تنخواہیں اور بھتے بالترتیب چیف الیکشن کمشنر اور الیکشن کمشنر کے مساوی ہیں۔

جواب چھوڑیں