مچھلیوں میں فارمیلن کے مسئلہ پر گوا اسمبلی 4 مرتبہ ملتوی

گوا اسمبلی کا مانسون سیشن جو آج شروع ہوا ہے اسے مچھلیوں میں فارملین کے مسئلہ پر 4 مرتبہ ملتوی کیاگیا۔ جو یہ وقفہ سوالات کا آغاز ہوا۔ اپوزیشن ارکان اسمبلی جن میں زیادہ تر کانگریس کے ارکان تھے اور این سی پی کا ایک رکن تھا۔ وہ مچھلیوں میں فارملین کے مسئلہ پر مباحت منعقد کرنے کا مطالبہ کررہے تھے۔ جبکہ اسپیکر چاہتے تھے کہ یہ مباحث وقفہ سوالات کے بعد منعقد ہوں۔ جب اس مسئلہ پر اپوزیشن ڈٹے رہے تو اسپیکر نے ایوان کو 15 منٹ کے لئے دوبارہ ملتوی کرنے کا اعلان کیا۔ ایوان کی کارروائی دوبارہ شروع ہونے کے بعد اپوزیشن ارکان نے اسپیکر سے اس مسئلہ پر مباحث منعقد کرنے کا مطالبہ کیا۔ لیکن اسپیکر نے خراج عقیدت کے حوالے کرنا شروع کئے۔ اس موقع پر اپوزیشن ایوان اسمبلی ایوان میں وسط میں پہنچ گئے اس پر اسپیکر کو 15 منٹ کیلئے ایوان پھر ایکبار ملتوی کرناپڑا۔ بعد ازاں تقریباً 12:30 بجے ایوان دوبارہ شروع ہوا تو اپوزیشن ایوان اسمبلی اپنا مطالبہ جاری رکھا۔ اسپیکر نے ایوان کو ڈھائی بجے دن تک ملتوی کردیا۔ ایوان کی کارروائی شروع ہونے کے بعد قائد اپوزیشن چندرکانت بابو کملیکر نے ادعا کیا کہ فوڈ اینڈ ڈرگ اڈمنسٹریشن (ایف ڈی اے) سے مچھلیوں میں فارملین کی دواطلاعات ملی ہیں ۔ انہوں نے کہاکہ اگر حکومت سنجیدہ ہے تو اس مسئلہ پر مباحث نہ کرنے چاہئیں۔ کمیلکر نے کہاکہ تمام 18 ارکان اسمبلی نے تحریک التوا پر دستخط کئے ہیں۔ چنانچہ فارملین کے مسئلہ پر پہلے بحث کی جانی چاہئے اور تحریک توجہ دہانی کے مرحلہ پر نہیں۔ نویلین کے رکن اسمبلی لوژنہوفلیرو نے ادعا کیا کہ مچھلی مافیا ریاست کے عوام کو ہلاک کررہا ہے۔ اور سست رفتار زہر پھیلارہا ہے۔ اس ہولناکی کے ان تاجروں کو اس پارٹی کی تائید حاصل ہے کل وہ کسی دوسری پارٹی کے ساتھ ہوں گے۔

جواب چھوڑیں