نئے ایرپورٹس کے قیام کیلئے کارآمد رپورٹ تیار کی جائے

ریاستی وزیر بلدی نظم و نسق و شہری ترقیات‘ کے تارک راما راؤ نے عہدیداروں کو شہر کے ساتھ ریاست بھر میں نئے ایرپورٹس کے قیام کے لئے ایک قابل عمل رپورٹ تیار کرنے کی ہدایت دی ہے۔ وزیر کے ٹی آر نے آج یہاں ایک جائزہ اجلاس طلب کیا اور اس اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ حیدرآباد ایرپورٹ سے دیگر اضلاع جیسے ورنگل‘ عادل آباد‘ رام گنڈم ‘ جکران پلی اور کتہ گوڑم کو مربوط کرنے کی ضرورت ہے اور انہوں نے کہا کہ ورنگل کے مامنور ایرپورٹ کے لئے 750 ایکر اراضی دستیاب ہے۔ ضرورت پڑنے پر مزید اراضی حاصل کی جائے گی۔ دیگر 4 اضلاع کے بہ نسبت ورنگل میں ایرپورٹ کے قیام کے امکانات بہت زیادہ ہیں۔ کے ٹی آر نے عہدیداروں کو شہری ہوابازی کی خصوصی حکمت عملی وضع کرنے کی ہدایت دی اور کہا کہ جہاں تک ورنگل ایرپورٹ کا معاملہ ہے‘ وہ اس سلسلہ میں 27 جولائی کو ورنگل میں ایک اہم اجلاس طلب کررہے ہیں۔ وزیر نے کہا کہ ضرورت پڑنے پر ایرپورٹ اتھاریٹی آف انڈیا سے مدد لی جائے گی۔ پی ٹی آئی کے بموجب ریاستی وزیر آئی ٹی و انڈسٹریز کے تارک راما راؤ نے عہدیداروں کو ہدایت دی کہ ریاست میں شہری ہوابازی شعبہ کو فروغ دینے کے لئے خصوصی ایویشن حکمت عملی تیار کریں۔ سرکاری اعلامیہ میں بتایا گیا ہے کہ وزیر کے ٹی آر نے عہدیداروں کو ہدایت دی کہ وہ تجاویز میں 5 ایرپورٹس کے قیام کے ساتھ ساتھ سی پلین اور ہیلی پورٹس کے لئے موزوں مقامات کی نشاندہی کو بھی شامل کریں۔ 5 ایرپورٹس کے قیام کے لئے ایرپورٹ اتھاریٹی آف انڈیا اور دیگر ایجنسیز کے ساتھ نشاندہی کردہ مقامات کا سروے کریں۔ انہوں نے عہدیداروں کو مرکزی حکومت کی اسکیم ’’اڑان‘‘ کا بھی مطالعہ کرنے کی ہدایت دی۔ اس اسکیم پر عمل کرتے ہوئے ریاست کو فائدہ پہونچایا جاسکے۔

جواب چھوڑیں