ایران کے ساتھ جنگ ‘آگ سے کھیلنے کے مترادف:حسن روحانی

ایران کے صدر حسن روحانی نے آج امریکہ کو انتباہ دیا کہ وہ شیر کی دم سے نہ کھیلیں ۔ انہوں نے بتایا کہ ایران کے ساتھ ایران کے ساتھ جنگ ‘تمام جنگوں کی ماں ہوں گی ۔ اپنے امریکی ہم منصب ڈونالڈ ٹرمپ کو مخاطب کرتے ہوئے روحانی نے بتایا کہ آپ نے جنگ کااعلان کیا اور بعد ازاں آپ ایرانی عوام کی تائید کااظہار کرناچاہتے ہیں ۔ انہوں نے ڈونالڈ ٹرمپ سے کہا کہ وہ ایرانی عوام کو خود ان کی سیکیورٹی اور مفادات کے خلاف نہیں اکسا سکتے ہیں ۔انہوں نے تہران میں ایرانی سفارتکارو ںکے ایک اجتماع کو مخاطب کرتے ہوئے اپنی ٹیلی ویژن تقریر میں یہ بات بتائی ۔ روحانی نے انتباہ دیا کہ ایران اہم گذر گاہ ابنائے ہرمز کو مسدود کرسکتاہے جو بین الاقوامی تیل کی رسدات کے لیے ایک اہم جہاز رانی راہ داری ہے ۔ انہوں نے بتایا کہ ہمیں ہمیشہ اس ابناکے سلامتی کی طمانیت دی ہے ۔ انہوں نے ڈونالڈ ٹرمپ کو آگ سے کھیلنے کے خلاف انتباہ دیتے ہوئے بتایا کہ اگر ایسا ہوتو انہیں ہمیشہ کے لیے افسوس ہوگا ۔ روحانی نے امریکی وزیر خارجہ مائیک پامپیو کی تقریر سے قبل اپنی تقریر میں بتایا کہ ایران کے ساتھ امن و امان ہوتو یہ بات سب کے لیے امن و امان ہوگی اور اس کے ساتھ جنگ تمام جنگوں سب سے بڑی جنگ ہوگی ۔ امریکہ ‘ایران کے خلاف معاشی تحدیدات کے لیے سختی میں کوشاں ہیں ۔ اس میں 2015کے انقلابی نیوکلیر سمجھوتہ کو ترک کردیاہے اور ایران کے خلاف سخت تحدیدات بھی عائد کررہاہے ۔ علاوہ ازیں واشنگٹن نے ایران میں اجتماعی پروپگینڈہ کوششوں کاآغاز کردیاہے جن میں سماجی میڈیا مہمات شامل ہیں جس کامقصد عوامی بے چینی میں اضافہ کرناہے ۔ جب بھی یوروپ نے ایران کے ساتھ سمجھوتہ کی کوشش کی تب وائٹ ہاوز اختلاف پیدا کیا ۔ انہوں نے یہ بھی بتایا کہ ہمیں یہ نہیں سمجھنا چاہئے کہ وائٹ ہاوز بین الاقوامی قانون کی مخالفت میں موجودہ سطح پر عالم اسلام کے خلاف رہے گا ۔ ایرانی صدر حسن روحانی نے امریکہ کو خبردار کرتے ہوئے کہا ہیکہ وہ شیرکی دم سے کھیلے کی کوشش نہ کرے۔ انہوں نے کہا کہ ایران کے ساتھ جنگ ’تمام جنگوں کی ماں‘ ثابت ہو سکتی ہے۔ ایرانی سرکاری خبر رساں ادارے اِسنا پر جاری ہونے والے اس بیان میں ایرانی صدر روحانی نے کہا کہ ایران کے ساتھ امن امریکہ کے لیے نہایت ضروری ہے۔روحانی کا یہ بیان ایرانی سپریم لیڈر آیت اللہ علی خامنہ ای کے اس بیان سے صرف ایک روز بعد آیا ہے، جس میں انہوں نے صدر روحانی کی اس تجویز کی حمایت کی تھی کہ اگر ایرانی برآمدات کو روکنے کی کوشش کی گئی، تو ایران خلیجی ممالک سے تیل کی ترسیل کو روک سکتا ہے۔صدر روحانی نے ایرانی سفارت کاروں کے اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے کہا، ’’ٹرمپ صاحب، شیر کی دم سے مت کھیلیے، کیوں کہ اس سے آپ کو بعد میں پچھتاوا ہو سکتا ہے۔‘‘روحانی نے خبردار کیا کہ امریکہ کو معلوم ہونا چاہیے کہ ایران کے ساتھ جنگ ’تمام جنگوں کی ماں‘ ہو گی۔یہ بات اہم ہے کہ امریکہ اور ایران کے درمیان تعلقات رواں برس مئی میں صدر ٹرمپ کی جانب سے ایران کے ساتھ جوہری ڈیل سے باہر نکل جانے کے اعلان کے بعد سے شدید کشیدگی کا شکار ہیں۔ گزشتہ روز ایران کے سپریم لیڈر آیت اللہ علی خامنہ ای نے کہا تھا کہ امریکہ کے ساتھ مذاکرات ایک فاش غلطی ہوں گے۔ ان کا کہنا تھا کہ ایرانی حکومت کو کوشش کرنا چاہیے کہ وہ دنیا کے تمام ممالک کے ساتھ اپنے تعلقات کو بہتر بنائے، تاہم اس فہرست میں امریکہ کو شامل نہیں کرنا چاہیے۔

جواب چھوڑیں