نائیڈو پرکانگریس کے اشاروں پر کام کرنے کا الزام: پورندیشوری

بی جے پی کی سینئر خاتون لیڈر وسابق مرکزی وزیر ڈی پورندیشوری نے الزام عائد کیا کہ آندھرا پردیش کے چیف منسٹر وتلگودیشم پارٹی کے سربراہ این چندرا بابو نائیڈو، کانگریس کے ہاتھوں کٹھ پتلی بنے ہوئے ہیں جو بانی ٹی ڈی پی آنجہانی این ٹی راما راؤ کی خواہش وتوقعات کے خلاف ہے ۔ یہاں بی جے پی آفس میں میڈیا کے نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے پورندیشوری نے کہا کہ تحریک عدم اعتماد کی تائید کرنے پر نائیڈو نے کانگریس کا شکریہ ادا کرنے کے لئے دہلی کا دورہ کیا ہے اس سے یہ بات صاف ہوجاتی ہے کہ نائیڈو، کانگریس کے اشاروں پر کام کررہے ہیں۔ سابق مرکزی وزیر نے مزید کہا کہ علیحدہ تلنگانہ کی تحریک کے دوران چندرا بابو نائیڈو نے ریاست کی تقسیم کی حمایت کا مکتوب اُس وقت کی مرکزی حکومت کے حوالے کیا تھا۔ پورندیشوری نے کہا کہ مرکز کی این ڈی اے حکومت، ریلوے زون کے قیام کے بشمول آندھرا پردیش کے ضروری پراجکٹوں کو پورا کرنے مدد کیلئے تیار ہے۔ تلگودیشم پارٹی سربراہ کو سخت تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے انہوںنے کہا کہ دگاراجو پٹنم بندرگاہ اور ضلع کڑپہ میں اسٹیل فیاکٹری کے قیام میں تاخیر کی اصل وجہ نائیڈو ہی ہیں۔ انہوںنے اس بات کی تردید کی کہ بی جے پی ریاست کی ترقی پر سیاست کررہی ہے ۔ ہم کوئی سیاست نہیں کررہے ہیں ، آئندہ انتخابات میں بی جے پی لوک سبھا اور اسمبلی کی تمام نشستوں سے مقابلہ کرے گی اور زیادہ سے زیادہ نشستوں پر کامیابی حاصل کرے گی ۔

جواب چھوڑیں