پارلیمنٹ میں ٹی ڈی پی کا احتجاج جاری رہے گا

آندھراپردیش کے چیف منسٹر و تلگودیشم پارٹی کے قومی صدر این چندرابابونائیڈو نے دوٹوک انداز میں کہا ہے کہ اے پی کو خصوصی درجہ کے مسئلہ پرا ن کی پارٹی کی جدوجہد پارلیمنٹ میں جاری رہے گی۔انہوں نے کہا کہ راجیہ سبھامیں مباحث کے ذریعہ ملک کی کئی جماعتوں کو اے پی کے مسائل پر قائل کروایا گیا۔اس سلسلہ میں اے پی کی حمایت کرنے والی جماعتوں سے چندرابابونے اظہار تشکر کیا۔آج صبح چندرابابونائیڈو نے تلگودیشم پارٹی کے ارکان پارلیمنٹ کے ساتھ ٹیلی کانفرنس منعقد کی۔اس کانفرنس میں پارٹی کے ارکان پارلیمنٹ،ریاستی وزرا،پارٹی کے ذمہ داروں نے شرکت کی۔انہوں نے کہاکہ پارلیمنٹ میں تلگودیشم اپنا احتجاج جاری رکھے گی اور پارٹی ارکان کو چاہئے کہ تمام مواقع سے استفاد کرتے ہوئے جدوجہد کے جذبہ کا اظہار کرے ۔اے پی سے ناانصافی کا اظہار تمام پلیٹ فارمس سے کیاجائے ۔ انہوں نے کہا کہ لوک سبھامیں پارٹی رکن جی جئے دیو،رام موہن نائیڈو،کے نانی کی تقاریر کا بہتر ردعمل حاصل ہورہا ہے ۔راجیہ سبھا میں سوجنا چودھری ،سی ایم رمیش کی تقاریر پربھی بہتر ردعمل مل رہا ہے ۔پارلیمنٹ کے احاطہ میں گاندھی جی کے مجسمہ کے قریب احتجاج بھی جاری رکھنے کی انہوں نے پارٹی کے ارکان پارلیمنٹ کو ہدایت دی۔انہوں نے دوٹوک انداز میں کہا کہ خصوصی درجہ کے مسئلہ پر انہوں نے کبھی بھی کوئی مفاہمت نہیں کی ہے ۔جس طرح نوزائیدہ بچہ کی پیدائش کے وقت کئی مسائل کا سامنا اس کو رہتا ہے ، اسی طرح نئی ریاست کو مشکلات سے باہر نکالنے کو ترجیح دی جارہی ہے ۔

جواب چھوڑیں