عمران، ملک کیلئے جرأتمندانہ فیصلے کریں گے۔محمد اظہر الدین کو امید

کانگریس قائد و ہندوستانی کرکٹ ٹیم کے سابق کپتان محمد اظہر الدین نے اس توقع کا اظہار کیا کہ کرکٹر سے سیاست داں بننے والے عمران خاں، جن کی پارٹی ، پاکستان میں حکومت تشکیل دینے جارہی ہے ، اور جو ماضی میں پڑوسی ملک کے خلاف ٹیم کو سبقت دلانے کیلئے جس طرح دلیرانہ فیصلہ لیا کرتے تھے ۔ ٹھیک اُسی طرح جراتمندانہ فیصلے لیں گے ۔ پاکستان کے قومی اسمبلی کے انتخابات میں خان کی پاکستان تحریک انصاف پارٹی، سب سے بڑی جماعت کے طور پر ابھری ہے تاہم اس جماعت کو قطعی اکثریت حاصل نہیں ہوئی ہے ۔ خاں، اپنے ملک کے وزیر اعظم کے عہدہ کی دوڑ میں سب سے آگے بتائے گئے ہیں۔ اظہر الدین نے خاں کی تیز اور جارحانہ بالنگ کا سامنا کیا ہے ۔ اور یہ دونوں بین الاقوامی میچوں میں اپنے اپنے ملک سے نمائندگی کرچکے ہیں۔ انہوںنے مزید کہا کہ پاکستانی ٹیم کے سابق کپتان عمران خاں جس راستے پر چل پڑے ہیں و پھولوں کی سیج نہیں ہے ان کی راہ میں کئی مسائل ومشکلات حائل ہیں ان سب کو ٹھیک کرنا پڑے گا ۔ کرکٹ کے میدان میں خان جو بھی فیصلے لیتے تھے وہ تمام مثبت ثابت ہوتے تھے ۔ وہ ، دلیرانہ اور شخصی فیصلہ لینے کیلئے جانے جاتے تھے ۔ جب وہ، پاکستان کے وزیر اعظم بن جائیں گے تب بھی وہ جرات مندانہ فیصلے لیں گے ۔ اظہر الدین نے اس توقع کا اظہار کیا ہے ۔ پی ٹی آئی سے بات چیت کرتے ہوئے اظہر الدین نے یہ بات کہی ۔ کانگریس قائد نے مزید کہا کہ حکومت چلانا اور کرکٹ ٹیم کی قیادت دو الگ الگ امور ہیں۔ سیاسی پچ پر عمران کیا کریں گے، اُس کیلئے ہمیں انتظار کرو اور دیکھو پالیسی اختیار کرنا ہوگا ۔ یہ پوچھے جانے پر کہ آیا خان کے پاکستانی وزیر اعظم بن جانے سے انڈو۔ پاک تعلقات بہتر ہوں گے ؟ تو اظہر نے کہا کہ انہیں یقین ہے کہ دونوں پڑوسی ممالک میں رنجشوں اور رقابت میں کمی ضرور آئے گی ۔ انہوںنے کہا کہ پہلی بات یہ ہے کہ پاکستان میں عمران کو کئی مسائل ومشکلات کا سامنا ہے ۔ پہلے انہیں ان مسائل کو حل کرنا ہوگا ۔ جس کے بعد وہ دوسرے مسائل کی طرف توجہ دیں گے ۔ اظہر نے کہا کہ سرحد پار سے دخل اندازی جاری ہے ۔ ان حالات میں پاکستان کے ساتھ بات چیت مشکل ضرور ہے ۔ پاکستان کو دخل اندازی اور دیگر سرگرمیوں کو روکنا ہوگا تب ہندوستان بات چیت کیلئے پیش رفت کرسکتا ہے ۔ انہوںنے کہا کہ انہوں نے ابھی تک عمران کو مبارکباد نہیں دی ہے ۔ تاہم انہیں خوشی اس بات کی ہے کہ ایک کرکٹر، ملک کے وزیر اعظم کے عہدہ پر فائز ہورہا ہے ۔ جو بہت کم دیکھنے کو ملتا ہے۔

جواب چھوڑیں