ریاست کی پائیدارترقی ‘کے سی آرکے پاس خصوصی ویژن:کے ٹی آر

حکومت تلنگانہ نے سی آئی آئی سدرن ریجن کونسل اجلاس کے حصہ کے طورپرریاستی وزیر کے ٹی آر اورچیف سکریٹری ایس کے جوشی کے ساتھ ایک مشاورتی میٹنگ منعقد کی ۔ سدرن ریجن کے صنعت کاروں سے خطاب کرتے ہوئے کے ٹی آر نے کہاکہ چیف منسٹر کے چندرشیکھررائو ‘ ریاست کی ہمہ جہت ترقی کے لئے اختراعی آئیڈیازاور اپنا ایک ویژن رکھتے ہیں۔ تشکیل تلنگانہ کے بعد جب سے ٹی آرایس برسراقتدارآئی ہے تب سے حکومت تین شعبوں کے استحکام پر بھرپور توجہ دے رکھی ہے ۔ان شعبہ جات میں زراعت ‘انفراسٹرکچر ‘ انڈسٹری اور کامرس شامل ہیں۔ فارمرس انوسٹمنٹ سپورٹ اسکیم ‘رعیتوبندھو کے تحت ریاست کے 58لاکھ زمین مالکان کومالی امداد فراہم کی جارہی ہے تاکہ انہیں زمینات پرزرعی سرگرمیاں شروع کرنے میں مددمل سکے ۔ لینڈریکارڈ کواپ ڈیٹ کرنے اورحکومت کی ممکنہ مساعی کے سبب یہ کام ممکن ہوسکا ۔ صرف ایک سودن کے اندر دیہی علاقوں کی 95فیصد اراضیات کے معاملتوں کو حل کردیاگیا ۔ رعیتوبندھواسکیم کے لئے بجٹ میں 12ہزار کروڑروپے فراہم کئے گئے ہیں۔ مختلف ماہرین معاشیات اور مرکزی حکومت نے اس اسکیم کی ستائش کی ہے ۔ اس اسکیم کے بعدحکومت نے 15اگست سے رعیتوبیمہ اسکیم متعارف کرانے جارہی ہے ۔ 18سے 60سال عمرکے کسانوں کوبیمہ فراہم کیاجائے گا۔ انشورنس کاپریمیم حکومت ادا کرے گی ۔کسان کی طبعی یا حادثاتی موت پر اس کے افراد خاندان کواندرون 10 یوم 5 لاکھ روپے اداکئے جائیں گے۔ مشن کاکتیہ کے تحت ریاست کے 46ہزارکے منجملہ 30 ہزار تالابوں ‘کنٹوں کااحیاء کیاگیا ۔ دیگر ذخائر آب کے مرمتی کام جاری ہیں۔ انہوں نے کہاکہ وہ شہری علاقوں کی جھیلوں اور تالابوں کے احیاء کے کاموں میں صنعت کاروں کو شراکت داربننے کی دعوت دے رہے ہیں۔ کے ٹی آر نے مشن بھاگیرتاکابھی تذکرہ کیا ریاست کے ہرگھرکوپینے کے پانی کی سربراہی کیلئے مشن بھاگیرتاپروگرام شروع کیاگیاہے جس کے کام آئندہ 2تا3ماہ کے اندرمکمل ہوجائیںگے۔ ریاست کو ڈیجیٹل بنانے کے لئے ٹی فائبر پراجکٹ شروع کیاگیا ہے ریاست بھر میں مشن بھاگیرتاکے پائپ لائنوں کے ساتھ ساتھ ٹی فائبرکیبل کی تنصیب عمل میںلائی جارہی ہے ۔ ریاست میں جنگلات کے رقبہ کو 22فیصد سے 33فیصد تک بڑھانے کے مقصد کے تحت ہریتا ہارم پروگرام شروع کیاگیا ہے ۔ 5برسوں کے دوران 230کروڑپودے لگانے کا نشانہ رکھاگیا ہے ۔گذشتہ تین برسوں کے دوران 80کروڑ پودے لگائے گئے ہیں۔ آئندہ 2برسوں میں دیئے گئے نشانہ کو حاصل کرنے کے اقدامات کئے جارہے ہیں۔ انہوںنے کہاکہ برقی پیداوارمیں ریاست خودکفیل ہوچکی ہے ۔کسانوں کیلئے 24گھنٹے بلاوقفہ برقی سربراہ کی جارہی ہے ۔ شمسی توانائی کی پیداوار میںبھی تلنگانہ کوسرفہرست مقام حاصل ہواہے۔ حکومت کی جانب سے ریاست میں فلاحی وترقیاتی اسکیمات کو روبہ عمل لایا جارہا ہے ۔کے ٹی آر نے کہاکہ ٹی آئی پاس کے سبب کئی صنعت کار ‘تلنگانہ میں صنعتیں قائم کررہے ہیں۔ چیف سکریٹری ایس کے جوشی نے کہاکہ حکومت ‘پائیدار‘مستقل ترقی پرتوجہ دے رہی ہے ۔ ریاست میں پانی کی دستیابی کو آسان بنانے کیلئے حکومت نے مشن کاکتیہ اورمشن بھاگیرتا جیسے اختراعی پروگراموں کوشروع کیاہے ۔ انہوں نے حکومت کی مختلف فلاحی اسکیمات پرروشنی ڈالی ۔

جواب چھوڑیں