غریب مظلوم کے دکھ تکلیف کا حصہ دار بننے سے سکون ملتا ہے :مودی

کانگریس کے صدر راہول گاندھی کے بیان پرجوابی حملہ کرتے ہوئے وزیراعظم نریندر مودی نے کہاکہ غریب، استحصال کا شکار، محرومین اور خواتین کی دکھ تکلیف کا حصہ دار بننے میں انہیں فخر محسوس ہوتا ہے اور وہ ‘شراکت دار’ کے نام سے نوازے جانے کو الزام نہیں بلکہ انعام سمجھتے ہیں۔پردھان منتری آواس یوجنا، امرت یوجنا اور اسمارٹ سٹی یوجنا کی تیسری سالگرہ کے موقع پر یہاں منعقدہ پروگرام سے خطاب کرتے ہوئے مودی نے کہاکہ اہل وطن کی زندگی کو آسان ، خوشحال اور محفوظ بنانے کا عہد آج تین برس بعد مزید مضبوط ہوا ہے ۔ اٹل جی نے جو ذمہ داری اٹھائی تھی اسے نئی بلندی تک پہنچانے کے لئے ہماری حکومت کروڑ وں اہل وطن کے ساتھ مل کر آگے بڑھ رہی ہے ۔ شہری ٹرانسپورٹ میں بہت بڑی تبدیلی لانے والی میٹرو کو سب سے پہلے دہلی میں زمین پر اتارنے کا کام اٹل جی نے کیا تھا۔تقریباََ ایک ہفتہ پہلے لوک سبھا میں کانگریس صدر راہول گاندھی کے اس بیان پر جس میں انہوں نے کہاکہ ملک کا چوکیدار دراصل شراکت دار ہے ، پر ردعمل ظاہر کرتے ہوئے وزیراعظم نے کہا کہ مجھ پر ایک الزام لگا ہے کہ میں چوکیدار نہیں ، شراکت دار ہوں ۔ میں اس الزام کو انعام سمجھتا ہوں ۔ مجھے فخر ہے کہ میں شراکت دار ہوں غریبوں کی تکلیف کا، میں شراکت دار ہوں ماں کی تکلیف کا جو چولہے کے دھوئیں میں آنکھیں خراب کرتی ہے ۔ میں شراکت دار ہوں اس کسان کے درد کا جس کی فصل سوکھے یا پالے میں برباد ہوجاتی ہے ۔ میں شراکت دار ہوں اس غریب کنبہ کی تکلیف کا جوعلاج کے لئے زمین فروخت کرنے پر مجبور ہوجاتا تھا۔ میں شراکت دار ہوں اس کوشش کا جو غریبوں کو چھت دے رہی ہے ۔ میں شراکت دار ہوں اس کوشش کا جس نے نوجوانوں کو روزگار کے مواقع دستیاب کرائے۔وزیراعظم مودی نے کہاکہ غریبوں نے انہیں ایمانداری اور ہمت دی ہے ۔

جواب چھوڑیں