تھیٹروں میں زائد قیمت پر خوردنی اشیا ء کی فروخت غیر قانونی: اکون سبھروال

ریاست کے ملٹی پلکس اور سینما تھیٹروں کے ذمہ داروں کو آج ہدایت دی گئی ہے کہ وہ یکم اگست سے ڈبہ بند اشیاء جیسے کول ڈرنکس اور پانی کی بوتلیں ایم آر پی سے زائد قیمت پر فروخت نہ کریں ۔ محکمہ اوزان وپیمائش کے بموجب مقررہ ایم آر پی سے زائد قیمت پر خوردنی اشیاء فروخت کرنا خلاف قانون ہے ۔ احکام کی خلاف ورزی کی صورت میں سخت کاروائی کی جائے گی بھاری جرمانے کے ساتھ جیل کی سزا بھی ہوسکتی ہے ۔ محکمہ کی جانب سے شہر حیدرآباد اور ریاست بھر میں سینما تھیٹروں اور ملٹی پلکس پر دھاوے منظم کئے جائیں گے اور زائد قیمت پر ڈبہ بند اشیاء کی فروخت پر کاروائی کی جائے گی ۔ کنٹرولر محکمہ اوزان و پیمائش اکون سبھروال نے اتوار کو یہاں میڈیا کے نمائندو ں سے بات چیت کرتے ہوئے یہ بات کہی ۔ انہوںنے کہا کہ سینما تھیٹروں اور ملٹی پلکسوں میں ایم آر پی سے زائد قیمت پر ڈبہ بند کھانے اور پینے کی اشیاء فروخت کی کئی شکایتیں وصول ہوئی ہیں۔ اکون سبھروال نے ایم آر پی کی خلاف ورزی اور رہنمایانہ خطوط پر عمل آوری کے تعلق سے آج یہاں ایک جائزہ اجلاس طلب کیا اور کہا کہ ان رہنمایانہ خطوط پر یکم اگست سے اطلاق ہوگا ۔ جس کی رو سے ریاست کے سینما تھیٹروں اور ملٹی پلکسوں میں ایم آر پی سے زائد قیمت پر کھانے ، پینے کی ڈبہ بند اشیاء کی فروخت خلاف قانون تصور کی جائے گی ۔ خلاف ورزی کی صورت میں بھاری جرمانہ کے ساتھ جیل کی سزا بھی ہوگی ۔ انہوںنے کہا کہ محکمہ نے زائد قیمت پر خوردنی اشیاء کی فروخت کو روکنے کیلئے سخت اقدامات اٹھانے کا فیصلہ کیا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ہر کوئی بھی بزنس، یا خدمات یا تفریح طبع کا سامان ، صارفین کیلئے قانونی طور پر جائز اور مسلمہ ہونا چاہئے ۔ اگر کسی صارف کو نقصان ہوتا ہے تو اس کی ذمہ داری تھیٹر مالکان پر ہوگی اور خاطی مالکان کے خلاف سخت کاروائی کی جائے گی ۔ محکمہ لیگل میٹرو لوجی قانون کے مطابق مینوفیکچرس کو پیاکڈایٹم پر پراڈکٹ کا نام پتہ، مینو فیکچر اور اکسپائر تواریخ ، وزن ایم آر پی اور کنزیومر کیئر نمبر شائع کرانا ہوگا ۔ جی ایچ ایم سی حدود کے تھیٹروں اور ملٹی پلکسوں میں 3اور4اگست کو دھاوے کرتے ہوئے رہنمایانہ خطوط پر عمل آوری کا جائزہ لیا جائے گا جبکہ4اور 5اگست کو ریاست بھر میں دھاوے کئے جائیں گے ۔ سبھروال نے کہا کہ واحد قیمت پالیسی کو نافذ کیا جائے گا ۔ مارکٹ میں جس قیمت پر چیزدستیاب رہے اُسی قیمت پر تھیٹروں میں بھی فروخت کی جانی چاہئے ۔ انہوںنے کہا کہ پہلی بار احکام کی خلاف ورزی پر کیس درج کرنے کے ساتھ 25ہزار روپے کا جرمانہ عائد کیا جائے گا دوسری بار جرم کے ارتکاب پر50ہزار کا جرمانہ ہوگا پھر جرم کے ارتکاب کی صورت میں خاطی کو ایک لاکھ روپے جرمانے کے ساتھ جیل کی سزا بھی بھگتنی پڑے گی ۔

جواب چھوڑیں