سکندرآباد میں بونال کا آغاز۔ کے سی آر کی افراد خاندان کے ساتھ اُجین مندر میں پوجا

سکندرآباد کی اُجین مہانکالی مندر میں آج سے دو روزہ بونال تہوار کا آغاز ہوا ۔ چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ اور افراد خاندان کے ساتھ ، مندر پہنچ کر دیوی مہانکالی کی پوجاکی ۔ صبح سے ہی مندر کے باہر ہزاروں بھکتوں کی طویل قطار یں دیکھی گئیں یہ بھگت ، دیوی مہانکالی کی پوجا اور درشن کیلئے طویل قطاروں میں اپنی باری کا انتظار کرتے ہوئے دکھائی دئیے ۔ کے سی آر کی دختر و ایم پی نظام آباد کے کویتا نے بھکتوں کی جانب سے دیوی کو گولڈن بونم پیش کیا ۔ 3.8 کیلو وزنی طلائی گھڑا، بھکتوں نے بطور عطیہ دیوی مہا نکالی کو پیش کیا ۔ ریاستی وزیر داخلہ این نرسمہا ریڈی ، وزرا ٹی سرینواس یادو اور اے اندرا کرن ریڈی، صدر پردیش کانگریس کمیٹی این تم کمار ریڈی ، بی جے پی قائد بنڈارو دتاتریہ اور جی کشن ریڈی بھی اُن افراد میں شامل ہیں جنہوں نے مہانکالی مندر میں پوجا کی ہے ۔ دونوں شہر حیدرآباد اور سکندرآباد کے علاوہ ریاست تلنگانہ کے مختلف مقامات پر ہر سال بونال تہوار منایا جاتا ہے ۔ وعدوں اور خواہشات کی تکمیل پر دیوی مہانکالی سے اظہار تشکر کے طور پر اس تہوار کا اہتمام کیا جاتاہے جس میں مختلف طور طریقوں سے دیوی کا آشیرواد حاصل کیا جاتا ہے ۔ دراصل امراض سے محفوظ رہنے ، بہتر صحت، خوشحالی اور امن کیلئے یہ تہوار منایا جاتا ہے۔تشکیل تلنگانہ کے بعد سے ٹی آر ایس حکومت نے بونال کو سرکاری تہوار کا موقف دیا ہے ۔ خواتین ، مٹی یا تانبہ کے برتن میں دودھ اور گڑ میں چاول ملا کر ایک خصوصی ڈش تیار کرتی ہیں اور اس برتن پر نیم کے پتوں کو خوبصورتی کے ساتھ سجاتی ہیں ۔ ان برتنوں کو سر پر اٹھاکر مندر جاتی ہیں اور اسے دیوی کو پیش کرتی ہیں ۔ سٹی پولیس کمشنر انجنی کمار نے بتایا کہ سکندرآباد میں مندر کے اطراف375 سی سی ٹی وی کیمرے نصب کئے گئے ہیں تاکہ بھکتوں کی نقل و حرکت پر نظر رکھی جاسکے ۔ یو این آئی کے بموجب ایک عہدیدار نے بتایا کہ رواں سال تقریباً40لاکھ کے قریب بھکت اس مندر میں درشن کریں گے جبکہ گذشتہ سال 32لاکھ بھکتوں نے مندر میں پوجا کی تھی ۔

جواب چھوڑیں