احد تمیمی کی فلسطینی صدر سے ملاقات‘ یاسرعرفات کے مقبرے پرحاضری

اسرائیلی فوجی کو تھپڑ رسید کرنے کی پاداش میں سزا بھگتنے والی بہادر فلسطینی لڑکی احدتمیمی نے آزادی کے لیے جدوجہد جاری رکھنے کا اعلان کیا ہے۔عرب میڈیا کے مطابق اسرئیلی فوجی کو تھپڑ رسید کرنے والی 17 سالہ نڈر فلسطینی لڑکی احد تمیمی نے جیل سے رہائی کے بعد اپنے اہل خانہ کے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا تھا کہ اسرائیلی قبضے کے خاتمہ تک جدو جہد جاری رہے گی۔ اسرائیلی جیلوں میں قید خواتین کے عزم و حوصلے بلند ہیں جس کی ایک مثال میں خود ہوں۔بعد ازاں احد تمیمی نے والدین کے ہمراہ فلسطینی صدر محمود عباس سے ملاقات کی۔ فلسطینی صدر نے عہد تمیمی کو جیل سے رہائی پر مبارک باد دیتے ہوئے تمیمی خاندان کی جدوجہد کی تعریف کی اور احد تمیمی کو نوجوانوں کے لیے تحریک آزادی فلسطین کا استعارہ قرار دیا۔ قبل ازیں عہد تمیمی نے حریت رہنما یاسر عرفات کے مقبرے پر بھی حاضری دی اور پھول چڑھائے۔ اس کا کہنا ہے کہ میری خواہش ہے کہ اسرائیلی عقوبت خانوں میں کوئی ایک فلسطینی بھی قید نہ رہے اور سب کو رہا کردیا جائے۔رہائی کے بعد ایک پریس کانفرنس سے خطاب میں عہد تمیمی نے کہا کہ ’ہماری آواز پوری دنیا تک پہنچ گئی ہے۔ اسرائیلی زندانوں میں قید فلسطینی خواتین اور مرد بھائیوں کی رہائی کے لیے جدو جہد جاری رکھیں گی۔صہیونی زندان میں قید رہنے والی عہد تمیمی تنہا نہیں بلکہ اس کی والدہ بھی اس کے ہمراہ تھیں۔ دونوں ماں بیٹی 8 ماہ تک اسرائیلی زندانوں میں پابند سلاسل رہیں۔
عہد کا کہنا تھا کہ اسرائیلی جیلوں میں پابند سلاسل تمام فلسطینی اسیرات کے عزائم بلند اور ارادے مضبوط ہیں۔

جواب چھوڑیں