امریکہ ۔ میکسیکو سرحد پر سیکیورٹی ختم کرنے ٹرمپ کی دھمکی

ریپبلکن پارٹی کے ارکان جو کانگریس پر کنٹرول کے لیے فکر مند ہے وہ باور کرتے ہیں وہ در اصل یہ ایک ناقص نظریہ ہے تاہم صدر ڈونالڈ ٹرمپ اس وقت بھی یہ کہہ رہے ہیں کہ وہ سیکیورٹی مسائل جن میں وہ رقم جو وہ امریکہ و میکسیکو کے درمیان سرحدی دیوار کے لیے حاصل کرناچاہتے ہیں اس کے بشمول سرحدی سیکیورٹی مسائل پر حکومت اپنے سرگرمیوں کو مسدود کرنے کے لیے تیار ہے ۔ انہوں نے بتایا کہ اگر ڈیموکریٹس ہمیں سرحدی سیکیورٹی کے لیے ووٹ نہ دیں تو وہ حکومت کی کاروائی کو روک دیں گے جس میں دیوار بھی شامل ہے ۔ ٹرمپ نے کل ٹوئٹر تحریر میں یہ بات بتائی۔ ٹرمپ نے کہاکہ ہمیں چاہئے کہ ہم قرعہ اندازی ‘پکڑو ‘چھوڑو وغیرہ سے کنارہ کشی اختیار کریں اور بالآخر میرٹ پر مبنی ترک وطن طریقہ کار اختیار کریں ۔ ضرورت ہے کہ ہمارے ملک میں عظیم افراد آئیں ٹرمپ نے گذشتہ ہفتہ ایوان کے اسپیکر پال ریان اور دیگر سے وائٹ ہاوز میں ملاقات کے بعد اپنے اس نظریہ کا اعادہ کیاجبکہ میٹنگ میں مبینہ طور پر ان لوگوں نے حکومت کی جانب سے یکم اکتوبر سے شروع ہونے والے بجٹ سال کے لیے سرکاری فنڈ کی فراہمی پر آگے بڑھنے سے اتفاق کرلیاہے ۔ میکانیل نے گذشتہ ہفتہ ریڈیو انٹرویو میں بتایا کہ 6نومبر کے وسط مدتی انتخابات سے قبل اس قسم کی سرگرمیوں کی مسدودی نہیں ہوگی ۔ انہوں نے تاہم اس بات کو تسلیم کیا کہ سرحدی فنڈنگ کا مسئلہ بالخصوص امکان ہے کہ راے دہی سے قبل حل نہیں ہوگا ۔ پال ریان نے میٹنگ کے بعد کیپٹل ہل میں بتایا کہ صدر اس بات کو یقینی بنانے کے لیے صبر کا راستہ اختیار کرنے تیار ہیں ہمیں وہ چیز مل جائے جس کی ہمیں ضرورت ہے ۔ تاکہ ہم اس کام کی تکمیل کرسکیں ۔ انہوں نے بتایا کہ دیوار کے لیے رقم کوئی مسئلہ نہیں ‘تاہم اصل مسئلہ یہ ہے کہ ایسا کب ہوگا ۔ وائٹ ہاوز نے میٹنگ کے بعد سے جو کچھ امکانی تبدیلی ہوسکتی ہے اس پر تبصرہ کی درخواست کا فوری کوئی جواب نہیں دیا ۔ ٹرمپ نے عہد کیا ہے کہ وہ یوم مزدور کی شروعات کے بعد جارحانہ مہم کا آغاز کریں گے تاکہ ریپبلکن ایوان اور سنیٹ پر اپنا کنٹرول برقرا ررکھیں ۔

جواب چھوڑیں