سی پی آئی کا کل سے ’’ہندوستانی دستور اور ملک کو بچائو‘‘ پروگرام

کمیونسٹ پارٹی آف انڈیا (سی پی آئی) نیشنل سمٹ نے ملک بھر میں یکم تا 15اگست میٹنگس اور سمینارس منعقد کرنے کا اعلان کیا ہے جو ’’ہندوستانی دستور اور ملک کو بچائو‘‘ پروگرام کا حصہ ہوں گے۔ پارٹی کے معتمد عمومی ڈاکٹر کے نارائنا نے یہ بات بتائی۔ وہ یہاں اخباری نمائندوں سے خطاب کر رہے تھے۔ انہوں نے کہا ہندوستانی پارلیمانی نظام کو خطرہ درپیش ہے۔ اس طرح پارٹی نے ملک بھر میں میٹینگس اور سمینارس منعقد کرنے پر زور دیا ہے اور عوام سے کہا ہے کہ وہ انہیں کامیاب بنائیں۔ ڈکٹرنارائنا نے وزیراعظم نریندرمودی کے خود کے مہاتما گاندھی سے تقابل کو غلط بتایا۔ انہوں نے کہا گاندھی نے تمام پارٹیوں کی مدد سے ہندوستان کی آزادی کیلئے برطانوی حکومت کے خلاف لڑائی کی جبکہ سنگھ پریوار (بی جے پی) نے برطانوی حکومت کی تائید کی اور آزادی کی تحریک میں حصہ نہیں لیا تھا۔ پھر کس طرح مودی اپنا تقابل گاندھی کے ساتھ کرسکتے ہیں۔ انہوں نے وزیراعظم کو اتوار کو لکھنو میں منعقدہ ایک پروگرام کے دوران صنعت کار مکیش امبانی کو ان پر ہاتھ رکھنے کی اجازت دینے پر کڑی تنقید کی اور کہا کہ مودی نے اپنے عہدہ کو گھٹا لیا ہے۔ کانگریس دور حکومت کے مقابلہ میں مودی حکومت نے پچھلے چار برسوں میں کارپوریٹس سے تین گنا زیادہ تعاون کیا۔ انہوں نے کہا مودی کے بیرونی ممالک کے تمام دور ے کارپوریٹس کے فائدہ کیلئے ہیں۔ جی ایس ٹی اور نوٹ بندی سے بڑے پیمانہ پر صنعت کاروں کو فائدہ ہوا ہے‘ عام آدمیوں کو نہیں۔

جواب چھوڑیں