پشکر کیس، ششی تھرور کو بیرونِ ملک سفر کی اجازت

دہلی کی ایک عدالت نے آج کانگریس قائد ششی تھرور کو جو اپنی اہلیہ سنندا پشکر کی یہاںایک عالیشان ہوٹل میں موت کے کیس میں ملزم ہیں ، بیرونِ ملک سفر کی اجازت دے دی ہے۔ ایڈیشنل چیف میٹرو پولیٹن مجسٹریٹ سمر وشال نے تھرور کی درخواست منظور کرلی جنہوں نے دسمبر تک پانچ ممالک بشمول امریکہ ، کینیڈا اور جرمنی کے 8 دوروں کی اجازت طلب کی تھی ۔ عدالت نے تھرور پر کئی شرائط عائد کیں اور کہا کہ ریکارڈ پر ایسی کوئی بات نہیں ہے جس سے یہ معلوم ہوتا ہے کہ وہ انصاف سے فرار اختیار کریںگے ۔ عدالت نے کہا ’’انہوں (تھرور) نے تحقیقات میں تعاون کیا ہے ۔ سمن کی اجرائی پر عدالت کے حکم کی تعمیل کرتے ہوئے وہ پہلی تاریخ پر حاضر ہوگئے تھے۔ ریکارڈ پر ایسی کوئی بات موجود نہیں ہے جس سے یہ قیاس کیا جاسکے کہ وہ انصاف سے فرار اختیار کریںگے۔‘‘ عدالت نے کانگریس رکن پارلیمنٹ کو ہدایت دی کہ وہ دو لاکھ روپئے فکسڈ ڈپازٹ کرائیں جو ان کی واپسی پر لوٹادیئے جائیںگے ۔ اس نے تھرور سے کہا کہ وہ تحقیقاتی عہدیدار اور عدالت کو سفر کی تفصیلات اور ملک میں ان کی آمد کے بارے میں واقف کرائیں ۔ عدالت نے انہیں یہ بھی ہدایت دی کہ وہ ثبوتوں کے ساتھ چھیڑچھاڑ نہ کریں اور گواہوں پر اثر انداز نہ ہوں۔ تھرور کی درخواست کی مخالفت کرتے ہوئے جو وکیل گورو گپتا کے ذریعہ پیش کی گئی تھی ، پولیس نے کہا کہ وہ سیاسی قائد کو موصول ہونے والے دعوت ناموں کی صداقت کی جانچ پڑتال کرنا چاہتی ہے اور انہیں ہر دورہ کے لیے علیحدہ اجازت طلب کرنی چاہیے تھی ۔ بہرحال گپتا نے کہا کہ ان کے موکل دعوت ناموں کے کمپیوٹر پرنٹ آؤٹس کی توثیق کے لیے سرٹیفکیٹس داخل کرنے تیار ہیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ علیحدہ درخواستوں کے سبب عدالت کا مزید وقت درکار ہوگا اور مقدمہ کی رفتار سست ہوگی ۔ قبل ازیں عدالت نے تھرور کو ایک دن کے لیے شخصی حاضری سے استثنیٰ دیا تھا کیوںکہ انہوں نے کہا تھا کہ وہ پارلیمنٹ اجلاس کے سبب حاضر ہونے سے قاصر ہیں۔

جواب چھوڑیں