ہندوستان کے کلیرنس کے بعد ہی میہول چوکسی کو شہریت دی گئی: انٹیگوا

انٹیگوا کی حکومت نے کہا ہے کہ بھگوڑے ہندوستانی جوہری میہول چوکسی کو کیریبین ملک کی شہریت پس منظر کی اچھی طرح جانچ اور ممبئی پولیس اور وزارت ِ خارجہ کے کلیرنس سرٹیفکیٹ کے بعد دی گئی۔ انٹیگوا اینڈ بربوڈا کے سٹیزن شپ بائی انوسٹمنٹ یونٹ(سی آئی یو) نے چوکسی کے پس منظر کی جانچ کے دوران پایا تھا کہ سیکوریٹیز اینڈ ایکسچینج بورڈ آف انڈیا(سیبی) نے جوہری کے خلاف 2 مرتبہ تحقیقات کی تھیں لیکن سیبی کے بموجب کیس بند کردیئے گئے۔ تفصیلی بیان میں شہریت دینے والی اتھاریٹی نے کہا کہ تاجر کی درخواست مئی 2017 میں ضروری کاغذات بشمول پولیس کلیرنس سرٹیفکیٹ کے ساتھ ملی تھی۔ پی ٹی آئی کے بموجب انٹیگوا کا دعویٰ ہے کہ ہندوستانی حکام نے میہول چوکسی کے پس منظر کی جانچ کے دوران اسے بتایا تھا کہ چوکسی کے خلاف کوئی منفی جانکاری نہیں ہے۔ ہندوستانی اسٹاک مارکٹ ریگولیٹر سیبی کا کہنا ہے کہ انٹیگوا نے اس سے نہ تو کوئی جانکاری مانگی اور اس نے ایسی کوئی جانکاری انٹیگوا کو دی۔

جواب چھوڑیں