نتیش کمار‘ ہرگزمستعفی نہیں ہوں گے: کے سی تیاگی

مظفرپور شیلٹرہوم عصمت ریزی کیس میں اپوزیشن کی تنقید جھیل رہی جنتادل یو نے آج زوردے کرکہا کہ چیف منسٹربہار نتیش کمار مستعفی نہیں ہوں گے۔ پارٹی، سپریم کورٹ کی زیرنگرانی تحقیقات کے لئے تیار ہے۔ نتیش کمار کے استعفیٰ کا مطالبہ مستردکرتے ہوئے سینئر جنتادل یو قائد کے سی تیاگی نے اپوزیشن قائدین بشمول کانگریس صدر راہول گاندھی کی آرجے ڈی کے زیراہتمام احتجاج (جنترمنتر) میں شرکت پر تنقید کی۔ انہوں نے کہا کہ ریاست کے بدبختانہ اور شرمناک واقعہ سے سیاسی فائدہ اٹھانے کی خواہاں جماعتوں کے لئے کل کا دن یومِ دوستی تھا۔ تیاگی نے نئی دہلی میںپریس کانفرنس میں کہا کہ نوجوان لڑکیوں کی عصمت ریزی، مرکز کی این ڈی اے اور بہار کی نتیش کمار حکومت کے خلاف اپوزیشن جماعتوں کو متحدکرنے کا مسئلہ کیسے ہوسکتی ہے۔ ریاست کی بے بس لڑکیوں پر سیاست، انتہائی بدبختانہ ہے۔ تیاگی نے زور دے کرکہا کہ اپوزیشن کے مطالبہ کے باوجود نتیش کمار ، مستعفی نہیں ہوں گے۔ انہوں نے اپوزیشن کو چیلنج کیاکہ وہ نتیش کمار کو اسمبلی میں بیدخل کرکے دکھائے۔ تیاگی نے کہا کہ نتیش بابو، حساس شخص ہیں۔ انہیں اس واقعہ پر شرمندگی کا احساس ہے۔ وہ ہرگز مستعفی نہ ہوں گے اور اپوزیشن کو ایسا کرنے بھی نہیں دیں گے۔ سینئر جنتادل یو قائد نے یہ بھی الزام عائد کیاکہ استعفیٰ کے مطالبہ کا مقصد ریت مافیا اور شراب مافیا کی مدد کرنا ہے جن پر ریاستی حکومت نے موثرپابندی لگائی ہے۔ جنترمنتر پر آرجے ڈی کے احتجاج میں راہول گاندھی کی شرکت بدبختانہ ہے۔ تیاگی نے کہا کہ میں سیتارام یچوری اور ڈی راجہ کی بھی مذمت کرتا ہوں جو صدرجے این یو طلباء یونین چندرشیکھر اور پوریہ کے رکن اسمبلی اجیت سرکار کی ہلاکت بھول گئے اور آرجے ڈی کے دھرنا میں شامل ہوگئے۔ جنتادل یو کے رکن راجیہ سبھا اور پارٹی ترجمان نے کہا کہ نتیش کمار، پٹنہ ہائی کورٹ کو لکھ چکے ہیں کہ وہ تحقیقات کی نگرانی کرے۔ پارٹی ایسی تحقیقات کے لئے تیار ہے چاہے اس کی نگرانی سپریم کورٹ کی زیرنگرانی پینل ہی کیوں نہ کرے۔ انہوں نے الزام عائد کیاکہ اپوزیشن جماعتیں چاہتی ہیں کہ جنتادل یو اور نتیش کمار کو ہٹاکر ریاست میں لاقانونیت اور جنگل راج پھر سے لے آئیں۔

جواب چھوڑیں