انڈونیشیا میں زلزلہ مہلوکین کی تعداد 98 ہوگئی

انڈونیشیا کے جزیرہ لومبوک میں 7 شدت کے زلزلہ میں مرنے والوں کی تعداد 91ہوگئی ہے جبکہ سینکڑوں زخمی ہوئے ہیں۔ حکام نے پیر کو یہ بات بتائی۔ اتوار کی شام یہ زلزلہ 10 کیلو میٹر کی گہرائی میں آیا تھا۔ ایک ہفتہ قبل اسی جزیرہ میں زلزلہ میں 16جانیں گئی تھیں۔ یہ جزیرہ اپنے ساحل ِ سمندر اور ہائیکنگ ٹریل کے لئے سیاحوں میں خاصہ مقبول ہے۔ مابعد زلزلہ 130 جھٹکے محسوس کئے گئے جن میں بعض کی شدت 5 سے زائد تھی۔ سونامی کی وارننگ جاری کی گئی لیکن چند گھنٹے بعد اسے واپس لے لیا گیا۔ زلزلہ پڑوسی جزیرہ بالی اور مشرقی جاوا کے بعض حصوں میں بھی محسوس کیا گیا۔ انڈونیشین نیشنل بورڈ فار ڈیزاسٹر مینجمنٹ (بی این پی بی) نے پیر کی صبح بچاؤ ٹیمیں متاثرہ علاقہ میں بھیجیں۔ ای ایف ای نیوز نے یہ بات بتائی۔ بی این پی بی کے بموجب زیادہ تر ہلاکتیں عمارتیں گرنے سے ہوئیں۔ سینکڑوں زخمیوں کا علاج ہسپتالوں کے باہر کیا گیا کیونکہ عمارتوں کی حالت ٹھیک نہیں ہے۔ انڈونیشیا میں زلزلے عام ہیں کیونکہ یہ ملک رِنگ آف فائر میں واقع ہے جہاں زلزلے آتے رہتے ہیں اور آتش فشاں پھٹتے رہتے ہیں۔ دنیا میں جتنے آتش فشاں پہاڑ لاوا اگلتے ہیں ان کی نصف سے زائد تعداد اسی رِنگ آف فائر میں واقع ہے۔ اے پی کے بموجب انڈونیشیا کے سیاحتی جزیرہ لومبو ک میں طاقتور زلزلہ نے مکانوں اور پلوں کو ڈھیر کردیا۔ کم ازکم 98 جانیں گئیں۔ بچاؤ کارکن متاثرہ علاقوں میں ابھی نہیں پہنچے ہیں۔ مہلوکین کی تعداد بڑھ سکتی ہے۔ لومبوک میں یہ دوسرا ہلاکت خیز زلزلہ تھا۔ 29 جولائی کو یہاں 16 جانیں گئی تھیں۔ نیشنل ڈیزاسٹر میٹیگیشن ایجنسی کے ترجمان نے بتایا کہ شمالی لومبوک میں بھاری نقصان ہوا ہے۔ 7 اضلاع میں نصف سے زائد مکان یا تو تباہ ہوگئے ہیں یا انہیں شدید نقصان پہنچا ہے۔ زلزلہ میں زمیں بوس مسجد کے اندر سے لوگوں کو باہر نکالا گیا۔ زلزلہ کے وقت مسجد میں نماز ادا کی جارہی تھی۔ 230 سے زائد افراد شدید زخمی ہوئے ہیں۔ ہزاروں مکانوں اور عمارتوں کو نقصان پہنچا ہے۔ 20 ہزار افراد کو عارضی شیلٹرس میں ٹھہرایا گیا ہے۔ زلزلہ کی شدت انڈونیشیائی حکام نے 7 اور امریکی جیولوجیکل سروے نے 6.9 بتائی ہے۔ ایک آسٹریلیائی سیاح نے بتایا کہ ہم کل شام تقریباً 7 بجے ڈنر کررہے تھے کہ ہم نے زلزلہ کا بڑا جھٹکا محسوس کیا۔ برقی گُل ہوگئی اور ہر کوئی جان بچانے دوڑ پڑا۔ ہم پر چھت گرنے لگی تھی۔ ہر کوئی اپنے بچاؤ کی فکر میں تھا۔ رائٹر کے بموجب بچاؤ ورکرس نے شمالی انڈونیشیا کے جزیرہ لومبوک میں پیر کے دن ہر طرف تباہی دیکھی۔ 6.9 شدت کے زلزلہ میں کم ازکم 91 جانیں گئی ہیں۔ سیاحوں کی بڑی تعداد نے جزیرہ چھوڑدیا۔ 13 ہزار سے زائد مکانات ڈھیر ہوئے ہیں۔ بعض علاقوں میں برقی سربراہی متاثر ہوئی ہے۔ ٹیلی فون رابطہ بھی منقطع ہوگیا ہے۔ انڈونیشیا کی فوج نے بتایا کہ وہ طبی امداد اور دیگر سپلائس کے ساتھ ایک بحری جہاز بھیج رہی ہے۔ لومبوک میں پچھلا زلزلہ 29 جولائی کو آیا تھا۔ کل کا زلزلہ اتنا طاقتور تھا کہ اس میں پڑوسی جزیرہ بالی میں بھی 2 جانیں گئیں۔ 2004 میں بحرہند میں آئی سونامی میں 13 ممالک میں 2 لاکھ 26 ہزار افراد ہلاک ہوئے تھے۔ ان میں ایک لاکھ 20 ہزار سے زائد جانیں انڈونیشیا میں گئی تھیں۔

جواب چھوڑیں