راشن کے حصول کیلئے آئیرس سسٹم متعارف کرانے کا فیصلہ: کمشنر سیول سپلائز اکون سبھروال

راشن شاپس سے چاول حاصل کرنے والے غریبوں کو آنے والے دنوں میں آئیرس سسٹم (آنکھوں کی تصویر)کے ذریعہ چاول سربراہ کیا جائے گا۔ یہ استفادہ کنندگان‘ فی الوقت فنگر پرنٹس سسٹم کے ذریعہ سبسیڈی چاول حاصل کر رہے ہیں مگر مستقبل قریب میں آئیرس سسٹم کے ذریعہ انہیں سبسیڈی چاول حاصل کرنا پڑے گا۔ محکمہ سیول سپلائز نے تجرباتی اساس پر ریاست کے چند اضلاع پداپلی‘ منچریال‘ سرسلہ اور یادادری بھونگیر میں 15اگست سے ائیرس سسٹم کو متعارف کرانے کا فیصلہ کیا ہے۔ اس کے بعد مرحلہ وار اساس پر اس نظام کو دیگر اضلاع تک توسیع دی جائے گی۔ کمشنر سیول سپلائز اکون سبھروال نے محکمہ کے عہدیداروں کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے یہ بات بتائی۔ قبل ازیں انہوں نے مختلف راشن شاپس کا دورہ کرتے ہوئے عوامی نظام تقسیم کا جائزہ لیا اور اس دوران انہوں نے یہ پایا کہ فنگر پرنٹس نظام میں خامیاں ہیں۔ چند استفادہ کنندگان نے شکایت کی تھی کہ فنگر پرنٹس نظام سے اشیائے ضروریہ کے حصول میں انہیں مشکلات کا سامنا ہے۔ کئی اے پی اوز مشینیں‘ معمر افراد اور خواتین کی انگلیوں کے نشانات کی شناخت میں ناکام رہی ہیں۔ انہوں نے وی آر اوز‘ وی اے اوز اور سیول سپلائز کے انسپکٹرس کو ایک وقت پر ان شکایتوں کا ازالہ کرنے کا مجاز گردانا کیا ہے۔ چند مقامات پر عہدیدار مجاز نے اس کا بیجا استعمال کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ان تمام مشکلات کا تیز حل آئیرس طریقہ کار سے ہی ممکن ہے۔ اکون سبھروال نے مزید کہا کہ ریاست کے تمام 17,200راشن شاپس میں مرحلہ وار اساس میں ائیرس نظام کو متعارف کرایا جائے گا۔ اس سلسلہ میں پہلے مرحلہ کا آغاز 15اگست سے ہوگا۔ پہلے مرحلہ کے اختتام کے بعد دوسرا مرحلہ یکم ستمبر سے شروع ہوگا۔ دوسرے مرحلہ میں سدی پیٹ‘ جگتیال اور محبوب نگر اضلاع کا احاطہ کیا جائے گا مابقی اضلاع میں آئیرس سسٹم کا 25ستمبر سے آغاز ہوگا۔

جواب چھوڑیں