کانگریس نے طلاق ثلاثہ بل کو منظور ہونے نہ دیا: اننت کمار

حکومت نے ہفتہ کے دن الزام عائد کیا کہ کانگریس ‘ اس کے صدر راہول گاندھی اور صدرنشین یوپی اے سونیا گاندھی طلاق ثلاثہ بل کی راجیہ سبھا میں منظوری رکواتے ہوئے مسلم خواتین سے دغا کررہے ہیں۔ حکومت نے ملک بھر کی خواتین کی تنظیموں سے اپیل کی کہ وہ اپوزیشن کے خلاف پرامن احتجاج کریں تاکہ اس پر اس قانون کی منظوری کے لئے اخلاقی دباؤ پڑے۔ پارلیمنٹ کا مانسون اجلاس ختم ہونے کے بعد پریس کانفرنس سے خطاب میں وزیر پارلیمانی امور اننت کمار نے کہا کہ حکومت طلاق ثلاثہ بل میں3 ترامیم کرچکی ہے۔ اب سوال یہ ہے کہ کانگریس ‘ راہول گاندھی جی اور سونیا جی اس بل کی راہ میں روڑے کیوں اٹکارہے ہیں۔ طلاق ثلاثہ بل کی منظوری رکواتے ہوئے انہوں نے ہماری مسلم بہنوں سے دھوکہ دہی کی ہے۔ لوک سبھا میں اتفاق ِ رائے سے جب یہ بل منظور ہوچکا ہے تو پھر راجیہ سبھا میں بار بار اس کی راہ کیوں روکی جارہی ہے۔ اننت کمار نے کہا کہ میرے خیال میں خواتین کی تمام تنظیموں‘ کروڑہا مسلم بہنوں کو انصاف دلانے کے لئے سرگرم تنظیموں کو پرامن احتجاج شروع کرنا چاہئے۔ انہیں راہول گاندھی‘ سونیا گاندھی اور دیگر اپوزیشن قائدین پر اخلاقی دباؤڈالنا چاہئے تاکہ طلاق ثلاثہ بل جلد منظور ہوجائے ۔ مانسون اجلاس کے تعلق سے انہوں نے کہا کہ اس کی سب سے اہم بات تحریک عدم اعتماد کو شکست رہی۔ اپوزیشن کو بی جے پی اور این ڈی اے نے کرارا جواب دیا۔ نائب صدرنشین راجیہ سبھا کے انتخاب نے بھی ثات کیا ہے کہ این ڈی اے متحد ہے۔ اننت کمار کے نائب وجئے گوئل نے مانسون اجلاس کو سماجی اجلاس سیشن قراردیا۔ انہوں نے کہا کہ 15 تا 30 اگست سماجی انصاف پندرہواڑہ منایا جائے گا۔

جواب چھوڑیں