لندن میں برقعہ پوش خاتون سے ڈرائیور کی بدتمیزی

لندن۔12اگست(پی ٹی آئی) برطانیہ میں ایک نقاب پوش مسلم خاتون سے دہشت گرد جیسا سلوک کیاگیا۔ ایک بس ڈرائیور اڑگیا کہ وہ اپنا چہرہ کھلا رکھے کیونکہ اس کے خیال میں یہ خاتون بس میں دھماکہ کرسکتی تھی۔ میڈیا نے یہ اطلاع دی۔ خاتون، فرسٹ بس 24 کے ذریعہ ایسٹن تا برسٹل سٹی سنٹر سفرکررہی تھی۔ اسے صدمہ ہوا کہ نقاب کی وجہ سے ڈرائیور اس کے بے عزتی کرنے لگا۔ وہ اپنے 2ماہ کے بچہ کے ساتھ بس میں سوار ہوئی تھی۔ بی بی سی نے یہ اطلاع دی۔ 20 سالہ خاتون نے بتایاکہ ڈرائیور نے اس سے کہا کہ یہ دنیا خطرناک ہے۔ اسے اپنے چہرہ دکھانا ہی ہوگا۔ ڈرائیور کو ایسا لگ رہاتھا کہ میں بس کو دھماکہ سے اڑادی گئی‘ یہ کیسے ممکن ہے جبکہ میرے ساتھ میرا بچہ موجود ہے۔ فرسٹ بس نے معافی مانگ لی ہے۔ کمپنی نے کہا ہے کہ ڈرائیور نے بڑی غلطی کی ہے۔ کمپنی کے نظم وضبط قواعد کے تحت ڈرائیور کو ڈانٹا گیا ہے۔ دیگر مسافرین بشمول ایک برقعہ پوش خاتون نے مدد کی۔ برقعہ پوش خاتون نے ڈرائیور کو ڈانٹا کہ برقعہ سے تمہارا کیالینا دینا ہے۔ ڈرائیور نے جواب دیاکہ میرالینا دینا ہے کیونکہ دنیا خطرناک ہے۔ ہمیں ایک دوسرے کا چہرہ دکھائی دیناچاہئیے۔

جواب چھوڑیں