امریکہ میں میک ڈونالڈ کے سلا د سے آنتوں کی بیماری

 امریکہ کی کئی ریاستوں میں آنتوں کی بیماری جو امکان ہے کہ میک ڈونالڈ کے ریستورانوں سے پھیلی اور 500 سے زائد افراد اس کی لپیٹ میں آئے ‘ ایسا لگتا ہے کہ ختم ہوگئی ہے۔ فوڈ اینڈ ڈرگ اڈمنسٹریشن (ایف ڈی اے) نے یہ بات کہی۔ ایف ڈی اے کے بموجب امریکہ کی 15 ریاستوں اور نیویارک شہر سے 511 کیسس کی لیباریٹری میں توثیق ہوئی تھی۔ ان سبھی نے میک ڈونالڈ ریستورانوں کا سلاد کھایا تھا۔ 11 ستمبر کو ایسا لگتا ہے کہ آنتوں کی بیماری ختم ہوگئی۔ ایف ڈی اے نے سنٹر فار ڈیسیس کنٹرول اینڈ پریونشن (سی ڈی سی) کے ساتھ مل کر جانچ کی لیکن یہ نہیں بتاسکی کہ آنتوں کی بیماری کس واحد ذریعہ سے پھیلی۔ سی ڈی سی کے بموجب 24 افراد ہسپتال میں شریک کرائے گئے لیکن کوئی موت واقع نہیں ہوئی۔ 13 جولائی کو میک ڈونالڈ نے 14 ریاستوں کے زائداز 3 ہزار مقامات پر سلاد کی فروخت ازخود روک دی تھی۔ کمپنی نے کہا تھا کہ اس نے سلاد مکس کے سپلائر کو بدل دیا ہے۔

جواب چھوڑیں