اِسرو جاسوسی کیس‘ سائنسداں نارائنن کو 50 لاکھ روپے معاوضہ

 سپریم کورٹ نے جمعہ کے دن اِسرو کے سابق سائنسداں ایس نمبی نارائنن کو 50 لاکھ روپے معاوضہ منظور کیا جنہیں جاسوسی کے جھوٹے کیس میں پھنسایا گیا تھا۔ انہیں جیل جانا پڑا تھا اور ان کی بدنامی ہوئی تھی۔ معاوضہ منظور کرتے ہوئے چیف جسٹس دیپک مشرا‘ جسٹس اے ایم کھنولکر اور جسٹس ڈی وی چندرچوڑ پر مشتبمل بنچ نے یہ ہدایت بھی دی کہ ایک کمیٹی قائم کی جائے جو خاطی عہدیداروں کے رول کی تحقیقات کرے جنہوں نے نمبی نارائنن کو ان کے بقول انڈین اسپیس ریسرچ آرگنائزیشن جاسوسی کیس میں پھنسایا۔ کمیٹی کے سربراہ موظف جج ہوں گے اور اس میں مرکز اور حکومت کیرالا فی کس ایک نمائندہ ہوگا۔ عدالت کا فیصلہ نمبی نارائنن کی درخواست پر آیا جنہوں نے گذارش کی تھی کہ جھوٹے کیس میں انہیں پھنسائے جانے کی تحقیقات کرائی جائیں۔ نمبی نارائنن نے کیرالا ہائی کورٹ کے فیصلہ کو سپریم کورٹ میں چیلنج کیا تھا۔ کیرالا ہائی کورٹ نے ریاستی حکومت کے فیصلہ کو برقراررکھا تھا کہ ان عہدیداروں کے خلاف کوئی کارروائی نہ ہو جنہوں نے 1990 کے دہے کے وسط میں سائنسداں کو غلط طورپر پھنسایا تھا۔

جواب چھوڑیں