سمندری طوفان مشرقی امریکی ساحل سے ٹکرا گیا

طاقتور سمندری طوفان فلورنس شمالی کیرولینا کے ساحل سے ٹکرا گیا ہے۔ اس طوفان کی وجہ سے جنوب مشرقی امریکی علاقوں کو زوردار جھکڑوں کا سامنا ہے۔ طوفان کی شدت میں کمی ہو گئی ہے اور یہ اب کیٹیگری ایک کا طوفان بن کر رہ گیا ہے۔ اس کے ساتھ چلنے والی تیز رفتار ہواؤں کی رفتار ڈیڑھ سو کلومیٹر فی گھنٹہ ہے۔ امریکی ریاست میامی میں قائم ہریکین سینٹر نے لوگوں کو متنبہ کیا ہے کہ وہ طوفانٍ بادوباراں سے محفوظ رہنے کے لیے تمام تر احتیاطی تدابیر اختیار کریں کیونکہ کئی مقامات پر سیلابی ریلوں کے قوی امکانات ہیں۔ فلورنس طوفان کے ٹکرانے سے قبل پندرہ لاکھ سے زائد افراد کو محفوظ علاقوں کی جانب منتقل کیا گیا ہے۔سمندری طوفان فلورنس مسلسل نارتھ اور ساؤتھ کیرولائنا کی ریاستوں کے ساحلی علاقوں کی طرف بڑھ رہا ہے جس کے نتیجے میں تیز ہواؤں اور بارشوں سے شاہراہیں ڈوب گئی ہیں اور دریا اپنے کناروں سے ابل پڑے ہیں۔ عہدے داروں کا کہنا ہے کہ جمعہ کو جب یہ ساحلی علاقوں سے ٹکرائے گا تو وہ لاکھوں لوگوں کے لیے مسائل اور پریشانی کا سبب بنے گا۔ سمندری طوفانوں سے متعلق قومی مرکز نے کہا ہے کہ اگرچہ فلورنس کا درجہ کم ہو چکا ہے اور اس وقت وہ طوفانوں کے پانچ درجے کے اسکیل پر دوسرے درجے پر ہے، لیکن اس کے باوجود وہ بدستور خطرناک ہے اور اس کے متعلق کوئی پیش گوئی نہیں کی جا سکتی۔ مرکز نے کہا ہے کہ توقع کی جا رہی ہے کہ طوفان جمعہ کی صبح یا سہ پہر کو نارتھ کیرولائنا کے قصبے کیپ فیئر سے ٹکرائے گا جس سے وہاں 40 انچ تک بارش ہو سکتی ہے۔ نارتھ کیرولائنا کے گورنر نے کہا ہے کہ ہریکین فلورنس کو کسی نے دعوت نہیں دی لیکن وہ یہاں پہنچ چکا ہے۔ انہوں نے لوگوں سے کہا کہ اگرچہ طوفان کی شدت کا درجہ کم ہو چکا ہے، لیکن وہ چوکس اور ہوشیار رہیں۔ اپنی حفاظت کا انتظام کریں، یہ ایک طاقت ور طوفان ہے جو ہلاک بھی کر سکتا ہے۔

جواب چھوڑیں