انتخابی حکمت عملی سازپرشانت کشور ‘جنتادل( یو) میں شامل

انتخابات کی حکمت عملی بنانے والے پرشانت کشور اتوار کے دن چیف منسٹر بہار نتیش کمار کی موجودگی میں جنتادل(یو) میں باقاعدہ شامل ہوگئے۔ پٹنہ میں پارٹی کے ریاستی عاملہ اجلاس سے قبل ان کی شمولیت عمل میں آئی۔ جنتادل یو کے ترجمان سنجے سنگھ نے اس کی توثیق کی۔ انہوں نے کہا کہ اب پرشانت کشور جنتادل یوقائد بن گئے ہیں۔ اعلان سے کچھ دیر قبل پرشانت کشور نے ٹوئٹ کیاتھا کہ میں بہار سے اپنا نیا سفر شروع کرنے کے تعلق سے پُرجوش ہوں۔ اقوام متحدہ کے سابق عہدیدار 41 سالہ پرشانت کشور نے انڈین پولیٹیکل اسوسی ایشن قائم کی تھی۔ انہیں 2015ء کے بہار الیکشن میں جنتادل یو کی انتخابی مہم چلانے کی ذمہ داری سونپی گئی تھی۔ اُس وقت بی جے پی سے ان کی راہیں الگ ہوگئی تھیں۔ بہار میں مہاگٹھ بندھن کی کامیابی کے بعد نتیش کمار کو پرشانت کشور کو مشیر منصوبہ بندی بنایاتھا۔ انہیں ریاستی کابینی وزیر کے مساوی درجہ ملاتھا۔ گذشتہ ہفتہ پرشانت کشور نے حیدرآباد کے انڈین اسکول آف بزنس(آئی ایس بی) میں ایک تقریب سے خطاب میں اشارہ دیاتھا کہ وہ سیاست میں قدم رکھنے والے ہیں۔ پرشانت کشور نے 2014ء کے الیکشن میں وزیراعظم نریندرمودی کی انتخابی حکمت عملی وضع کی تھی۔ پی ٹی آئی کے بموجب انتخابات کی حکمت عملی وضع کرنے والے پرشانت کشور اتوار کے دن پٹنہ میں چیف منسٹربہار نتیش کمار کی جنتادل یو میں شامل ہوگئے۔ نتیش کمار نے پرشانت کشور کو اپنی پارٹی کے اجلاس عاملہ میں پارٹی میں شامل کیا۔ یہ اجلاس چیف منسٹر کی سرکاری قیام گاہ پر منعقد ہوا ۔ پارٹی ذرائع نے یہ بات بتائی۔ ریاستی عاملہ اجلاس میں پرشانت کشور کو چیف منسٹر کے بازو بٹھایاگیا۔ یہ فوری معلوم نہ ہوسکا کہ پارٹی میں پرشانت کشور کو کیارول دیاجائے گا۔ لوک سبھا الیکشن سے چند ماہ قبل پرشانت کشور جنتادل یو میں شامل ہوگئے ہیں۔ بہار کے ضلع بکسر کے رہنے والے پرشانت کشور 2014ء میں اس وقت مشہور ہوئے تھے جب انہوں نے نریندرمودی کی انتخابی مہم کو کامیابی سے ہمکنارکیاتھا۔ ایک سال بعد انہوں نے نتیش کمار کو بہار میں پھر سے برسرِاقتدار لانے میں مدد کی تھی۔ اس وقت جنتادل یو نے آرجے ڈی اور کانگریس کے ساتھ مل کر الیکشن لڑا تھا۔ چیف منسٹرنتیش کمار نے پرشانت کشور کو اپنا مشیر بنالیاتھا اور انہیں کابینی وزیر کا درجہ دیاتھا۔ پرشانت کشور نے بعدازاں پنجاب میں کانگریس کے لئے کام کیا جہاں کانگریس شرومنی اکالی دل۔بی جے پی اتحاد کی 10 سالہ حکومت کو ختم کرکے اقتدار پرلوٹی۔ اترپردیش میں بھی پرشانت کشور نے کانگریس کے لئے کام کیا لیکن یہاں ان کی حکمت عملی کارگر نہیں رہی۔ 403 رکنی اسمبلی میں کانگریس کو صرف 10 نشستیں حاصل ہوئیں۔

جواب چھوڑیں