فلپائن میں سمندری طوفان’ منگ کھوٹ کی شدید تباہی۔ 50 افراد ہلاک

انتہائی طاقت ور سمندری طوفان ’منگ کھوٹ‘ اپنی پوری قوت کے ساتھ چین اور ہانگ کانگ کی جانب بڑھ رہا ہے۔ قبل ازیں اس کی زد میں آ کر فلپائن میں کم از کم 50 افراد ہلاک ہو گئے۔ منگ کھوٹ ہفتہ کی شب دو سو کلومیٹر فی گھنٹے کی رفتار سے اس جنوب مشرقی ایشیائی ملک سے ٹکرایا۔ فلپائن میں اس قدرتی آفت کی تباہی کے بعد امدادی کارروائیاں شروع کر دی گئیں ہیں۔ بتایا گیا ہے کہ اس طوفان کی وجہ سے ملک کے شمالی حصوں میں ہزاروں افراد کو محفوظ مقامات پر منتقل ہونا پڑا۔ ایک بیان کے مطابق تقریباً پچاس لاکھ افراد اس طوفان سے متاثر ہوئے ہیں۔۔زرعی صوبے کاگیان میں فصلوں کو شدید نقصان پہنچے کا اندیشہ ہے۔190 کلو میٹر کی رفتار سے بارش اور طوفانی ہواؤں والا یہ طوفان اب جنوبی چین کی طرف بڑھ رہا ہے۔طوفان کے باعث شمال مشرقی جزیرے لوزون میں بگاؤ میں زمین سرکنے کے واقعات پیش آئے۔یہ سمندری طوفان 2018 کا شدید ترین طوفان تھا تاہم زمین پہنچنے پر اس کی شدت قدرے کم ہو چکی تھی۔حکام کے مطابق کاگیان کے صوبائی دارالحکومت میں تقریباً سبھی عمارتوں کو نقصان پہنچا ہے۔صدر کے سیاسی مشیر فرانسس ٹولینٹینو نے بی بی سی کو بتایا کہ زرعی صوبے میں فصلوں کو بھی شدید نقصان پہنچا ہے۔ان کے اندازے کے مطابق چاول اور مکئی کی تیار فصلوں میں سے محض پانچ فیصد کی کٹائی ہو پائی تھی۔فلپائن میں ریڈ کراس کے چیئرمین رچرڈ گورڈن نے بی بی سی کو بتایا کہ ہفتہ کو آنے والے طوفان کا خطرہ ابھی ٹلا نہیں ہے۔’ہوا کے بعد بارش آتی ہے اور اس کے بعد پانی تو اس کا مطلب ہے کہ ابھی ہمیں سیلاب کا سامنا ہوگا۔‘بی بی سی کے نامہ نگار جوناتھن ہیڈز نے دیکھا کہ 200 افراد کو سکول کی ایک عمارت میں پناہ لینا پڑی کیونکہ دریا میں پانی کی سطح کافی بلند ہو چکی تھی۔سمندی طوفانوں کے موسم میں فلپائن کو ان کا سامنا رہتا ہے لیکن اس طوفان کی طاقت نے سنہ 2013 میں آنے والے ملکی تاریخ میں شدید ترین سمندر طوفان ہیان کی یاد تازہ کر دی جس میں سات ہزار لوگ ہلاک ہوئے تھے۔تاہم اب کی بار نقل مکانی اور بچاؤ کی کارروائیوں میں بہتری آنے کے سبب سکول بند کر دیے گئے، آمد و رفت معطل تھی اور فوج کو چوکس رکھا گیا تھا۔یہ طوفان اب بھی طاقت ور ہے اور جنوبی چین کی طرف بڑھ رہا ہے۔ اس کی ہواؤں کی رفتار 145 کلو میٹر فی گھنٹی ہے لیکن خدشہ ہے کہ یہ پھر سے طاقت ور ہو جائے گا اور سپر ٹائیفون بن جائے گا۔وہاں مقامی حکام نے خطرے کی سطح کو بڑھا کر نو کر دیا ہے اور لوگوں کو گھروں کے اندر رہنے کی تاکید کی گئی ہے تاکہ وہ اڑتے ہوئے ملبے سے بچ سکیں۔ہانگ کانگ میں زیادہ تر دکانیں اور عوامی سروسز معطل ہیں۔ بین الاقوامی ہوائی اڈہ پر 500 پروازیں منسوخ کر دی گئی ہیں جس سے ایک لاکھ مسافر متاثر ہوں گے۔

جواب چھوڑیں