گاؤ رکھشا کے نام پر ہجومی تشدد جمہوریت پر کلنک:مایاوتی

بی ایس پی کی سربراہ مایاوتی نے گاؤ رکھشا کے نام پر ہجومی تشدد کو جمہوریت کیلئے ایک کلنک قراردیتے ہوئے بی جے پی حکومت پر الزام لگایاکہ وہ اِس مسئلہ پر لاپرواہی اور نرمی سے کام لے رہی ہے۔ یہاں صحافیوں سے بات چیت کرتے ہوئے مایاوتی نے بتایاکہ بی جے پی کی زیر حکمرانی ریاستوں میں گائو رکھشا کے نام پر ہجومی تشدد کا بڑھتا ہوا رجحان جمہوریت پر ایک دھبہ ہے۔ تاہم حکومت نرمی اور لاپرواہی سے کام لے رہی ہے۔ اُنہوںنے بتایاکہ دلتوں ‘ قبائیلوں‘ پسماندہ طبقات‘ مسلمانوں اور عیسائیوں کیخلاف بی جے پی حکومت کی سرگرمیاں شروع سے ہی جاری ہیں اور دستور کیخلاف راستہ اختیار کرنے کے علاوہ اس کے ساتھ سوتیلا ماں جیسے سلوک کیلئے بی جے پی کے عزم وارادے کا شاخسانہ ہے۔ اُنہوںنے بتایاکہ بی جے پی کی بنیادی پالیسی کا یہ حصہ رہا ہے جبکہ پارٹی کے اقتدار پر آنے کے بعد سے یہ صورتحال تشویشناک ہوتی جارہی ہے۔ مایاوتی سپریم کورٹ کی ہدایت پر اپنے وسیع وعریض بنگلہ کے تخلیہ کے بعد اپنی نئی قیامگاہ میں صحافیوں سے بات چیت کررہی تھیں۔ اُنہوںنے بی جے پی پر الزام لگایاکہ وہ 2019لوک سبھا انتخابات کے قریب آنے کے پس منظر میں جداگانہ پھوٹ پیدا کرنے والے حربے اختیار کررہی ہے۔ مایاوتی نے بتایاکہ زعفرانی پارٹی پرکشش اعلانات کررہی ہے اورسابق وزیر اٹل بہاری واجپائی کی موت سے فائدہ حاصل کرنے کی مقدور بھر کوشش کررہی ہے۔ مایاوتی نے بتایاکہ جس وقت واجپائی زندہ تھے بی جے پی کبھی بھی اُن کے نقش قدم پر نہیں چلی تھی۔ بی ایس کی سربراہ کا بیان اہمیت رکھتا ہے کیونکہ آج اٹل بہاری واجپائی کے گزرنے کے بعد ایک ماہ کا عرصہ ہوچکا ہے۔ مایاوتی نے بتایاکہ ملک کے عوام جانتے ہیں کہ واجپائی کے نام پر بی جے پی اور آر ایس ایس نے جو مہم شروع کی ہے اُس کا مقصد اُس کی ناکامیوں کی پردہ پوشی ہے۔ بی جے پی کو تاہم اِس سے کوئی فائدہ نہیں ہوگا۔ ملک کے عوام ا ب سمجھتے ہیں کہ 2014لوک سبھا انتخابات میں کئے گئے وعدوں میں سے کسی کی بھی تکمیل نہیں ہوئی ہے۔ نوٹ بندی کا حوالہ دیتے ہوئے مایاوتی نے الزام لگایاکہ غیر منصوبہ بند طریقہ سے اس کو روبہ عمل لایا گیا جس کی وجہ سے مالیاتی ہنگامی صورتحال پیدا ہوگئی۔ اُنہوںنے دعویٰ کیاکہ اونچی قدر کے کرنسی نوٹوں کو حکومت کی جانب سے واپس لینے کی بناء پر بہت سے لوگ اپنی زندگیوں سے محروم ہوگئے ہیں۔ مایاوتی نے بتایاکہ اِس کے ذریعہ مزدوروں‘ کسانوں ‘ چھوٹے بیوپاریوں اور جفا کش لوگوں کا ا ستحصال کیا گیا‘وقت آگیا ہے کہ رپورٹ طلب کی جائے۔ نوٹ بندی کے بعد عوام کو تسکین دینے کیلئے بی جے پی کے پاس کچھ نہیں ہے۔

جواب چھوڑیں