پاکستان کو ہراکر ہندوستان ایشیا کپ کے فائنل میں داخل

ٹیم انڈیا نے ایشیا کپ میں ہندوستان کو یکطرفہ مقابلہ میں 9 وکٹ سے شکست دیکر فائنل میں رسائی حاصل کرلی ہے۔سوپر فور مرحلہ کا تیسرا میاچ غیر اہم ثابت ہوااور ہندوستانی ٹیم نے جیت کیلئے مقررہ 238رنوں کے نشانہ کو صرف39.3 اوورس میں محض ایک وکٹ پر حاصل کرلیا۔ہندوستانی کھلاڑیوں نے ہر شعبہ میں پاکستان کو مات دیتے ہوئے ناقابل شکست رہنے کے سلسلہ کو برقرار ر کھا۔جیت کے نشانہ کا ٹیم انڈیا نے بلند حوصلہ کے ساتھ آغاز کیا اور سلامی بلے باز کپتان روہت شرما اور شِکھر دھون نے پہلی وکٹ کی رفاقت میں 210رن بناکر پاکستان کی شکست پر مہر ثبت کردی ۔کوئی پاکستانی کھلاڑی ہندوستانی بلے بازوں پر حاوی نہ ہوسکا ۔دھون نے ٹورنمنٹ میں ا پنی دوسری سنچری اسکور کرکے نہ صرف اپنی صلاحیتوں کا لوہا منوایابلکہ انہیں میان آف دی میاچ کا حقدار تسلیم کیا گیا۔انہوں نے 100گیندوںپر16چوکے اوردو ہمالیائی چھکوں کی مدد سے 114انفرادی اسکور کرکے رن آوٹ ہوگئے ۔پاکستانی کپتان نے چھ گیندبازوں کو استعمال کیا لیکن کوئی بھی ایک کھلاڑی کو آوٹ کرنے سے قاصر رہا۔کپتان روہت شرما نے بھی دھواں دار سنچری بنائی ۔انہوں نے 119رنوں کا سامنا کرتے ہوئے 7چوکے اور4بلندبالا چھکے لگائے اور111رن پر ناٹ آوٹ رہے ۔روہت نے ونڈے کئریر میں اپنے 7ہزار رن بھی مکمل کرلئے ۔ 210رنوں کے مجموعی اسکور پر دھون کے آوٹ ہونے کے بعد کریز پر آئے اجنکیا رہانے 18گیندوں پرایک چوکے کی مدد سے 12رن پر ناٹ آوٹ رہے۔روہت نے اپنے کئریر کی 19 اور دھون نے 15 سنچری اسکور کی ۔قبل ازیں پاکستان کے کپتان سرفراز احمد نے ٹاس جیت کر پہلے بیٹنگ کرنے کا فیصلہ کیا ۔پاکستان کے دونوں سلامی بلے بازوں نے محتاظ انداز میں بیٹنگ کا آغاز کیا جو کہ بعد میں ٹیم کیلئے نقصاندہ ثابت ہوا۔پاکستان کے اوپنر فخر زمان اور امام الحق کی جوڑی بڑی شراکت بنانے میں ناکام رہی اور امام الحق جلد آؤٹ ہوگئے۔کلدیپ یادو کی اپیل پر امپائر نے فخرزمان کو ایل بی ڈبلیو قرار دیا جبکہ ویڈیو میں واضح دیکھا گیا کہ فخرزماں جب گر رہے تھے تو گیند ان کے ہاتھوں کو چھونے کے بعد پیڈ سے ٹکرائی تھی۔وہ31رنوں کی انفرادی اننگز کھیل کر پویلین کی راہ لی۔یہ میچ پاکستان کے لیے انتہائی اہمیت کا حامل تھا، اور اس میچ میں فتح ہی پاکستان کے لیے فائنل میں پہنچنے کی راہ ہموار کرنی تھی ۔دونوں ٹیموں کے درمیان ہونے والا ایونٹ کا پہلا میچ ہندوستان کے نام رہا تھا اور اس نے 8 وکٹوں سے باآسانی پاکستان کو شکست سے دوچار کیا تھا۔ پاکستان نے شعیب ملک 78 کی شاندار نصف سنچری اور ان کی کپتان سرفراز احمد 44 رنوں کی بدولت اوردونوں کے درمیان چوتھے وکٹ کے لئے 107 کی شراکت کی مدد سے پاکستان نے ہندوستان کیخلاف 7 وکٹ کے نقصان پر 237 رن کا اسکور بنایا۔ایک مرحلہ پر پاکستان کے تین کھلاڑی 16ویں اوور تک اپنے محض 58رن پر گنوا دیئے تھے لیکن سرفراز اور شاندار فارم میں کھیل رہے سابق کپتان شعیب ملک نے سنچری شراکت کرکے پاکستان کو سنبھال لیا۔ ملک نے 90 گیندوں پر 78 رن کی اننگز میں چار چوکے اور دو چھکے لگائے ۔سرفراز نے 66 گیندوں پر 44 رن میں دو چوکے لگائے ۔سلامی بلے باز فخر زماں نے 44 گیندوں پر ایک چوکے اور ایک چھکے کی مدد سے 31 اور آصف علی نے 21 گیندوں پر ایک چوکے اور دو چھکوں کی مدد سے 30 رن بنائے ۔امام الحق کو لیگ اسپنر یجویندر چہل نے ایل بی ڈبلیو آوٹ کیا جبکہ فخرزماں کو چائنا مین گیندباز کلدیپ یادو نے ایل بی ڈبلیو کیا۔ بابر اعظم کو رویندر جڈیجہ نے اپنے تھرو پر رن آؤٹ کیا۔ امام الحق نے 10 اور اعظم نے 9رن بنائے۔سرفراز اور ملک کی شراکت داری کو کلدیپ نے توڑا۔ کلدیپ نے سرفراز کو کپتان روہت شرما کے ہاتھوں کیچ کرا دیا۔ ملک کو جسپریت بمراہ نے وکٹ کے پیچھے مہندر سنگھ دھونی کے ہاتھوں کیچ کرا دیا۔ آصف کو چہل نے اور شاداب خان کو بمراہ نے آوٹ کیا۔ محمد نواز 15 رنز پر ناٹ آؤٹ رہے ۔بمراہ نے 29 رن‘ چہل نے 46رن اور کلدیپ یادونے 41 رن کے عوض دو دو وکٹ حاصل کئے ۔شعیب ملک نے آج اپنی اننگز کے دوران پاکستان کی جانب سے ونڈے میںسب سے زیادہ رن بنانے والے کھلاڑیوں میں 7ویں مقام پر براجمان ہیں ۔انہوں نے سلیم ملک کے7170رنوں کے ریکارڈ توڑتے ہوئے یہ اعزاز حاصل کیا۔اس فہرست میں انضمام الحق سرفہرست ہیں۔پاکستان کی یہ ہندوستان کے ہاتھوں اب تک کی بدترین شکست ہے۔ہندوستان نے اب تک ایشیا کپ میں پاکستان کو8مرتبہ اور پاکستان نے ٹیم انڈیا کو4بار ہزیمت سے دوچار کیا ہے۔ایشیا کپ میں آج آرام کا دن ہے اور پیر کے روز کوئی میاچ نہیں کھیلا جائے گا۔ٹیم انڈیا منگل کو ابوظہبی میں سوپر فور مرحلہ کے پانچویں میاچ میں افغانستان سے نبرد آزما ہوگی جبکہ چہارشنبہ کو پاکستانی ٹیم بھی ابوظہبی میں ہی بنگلہ دیش سے مقابلہ کرے گی۔٭٭٭رات دیر گئے اختتام پذیرمیاچ میں بنگلہ دیش نے افغانستان کے خلاف 3 رنوں سے سنسنی خیز کامیابی حاصل کی۔ بنگلہ دیش نے پہلے بیاٹنگ کرتے ہوئے 7 وکٹس پر249 رن بنائے۔ جواب میں افغانستان کی ٹیم نے مقررہ50اوورس میں7وکٹس کھوتے ہوئے246 رن بناکرشکست سے دوچارہوگئی۔ محموداللہ نے74 رن اورایک وکٹ کے علاوہ امرالقیس کے72 رنوںکی بدولت بنگلہ دیش کامیابی سے ہمکنارہوا۔

جواب چھوڑیں