تلنگانہ کی تیز رفتار ترقی کے سی آر کا کارنامہ : سریش ریڈی

ٹی آرایس میں شمولیت کے بعد پہلی مرتبہ نظام آباد آمد پرسابق اسپیکر اسمبلی کے آر سریش ریڈی کا سابق رکن اسمبلی نظام آباد اربن بیگالہ گنیش گپتا ، مئیر آکولہ سجاتا ، ریڈ کو چیرمین ایس اے علیم و دیگر نے شاندار خیر مقدم کیا ۔ اس موقع پر کے آر سریش ریڈی نے صحافیوں سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ تلنگانہ، تیزی کے ساتھ ترقی کی راہ پر گامزن ہے ۔ٹی آر ایس حکومت کے اقدامات سے متاثر ہوکر وہ 100 سالہ قدیم سیاسی جماعت کانگریس سے علیحدگی اختیار کرتے ہوئے ٹی آرایس پارٹی میں شامل ہوچکے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ جس وقت وہ ٹی آرایس میں شامل ہوئے تھے اس وقت ضلع کے تمام اسمبلی حلقوں سے پارٹی امیدواروں کے ناموں کا اعلان ہوچکا تھا وہ صرف چندر شیکھر رائو کی قیادت کو مستحکم کرنے کی غرض سے ٹی آرایس پارٹی میں شامل ہوئے ہیں۔ کے آر سریش ریڈی نے کہا کہ تلنگانہ راشٹریہ سمیتی کی حکومت میں گذشتہ چار سالوں کے دوران کئی ترقیاتی کام انجام دئیے گئے جس کی سابق میں نظیر نہیں ملتی ۔ ضلع کو آبی سہولتیں فراہم کرنے کیلئے کالیشورم پراجکٹ کا آغاز کیا گیا ہے اور خلیجی ممالک کے متاثرین کی باز آبادکاری کیلئے منصوبہ بندطریقہ سے اقدامات کئے جارہے ہیں انہوں نے عظیم اتحاد کے بار میں کہا کہ کل تک جن پارٹیوں کے اصول مختلف تھے آج یہ پارٹیاں ایک پلیٹ فارم پر جمع ہورہی ہیں۔ ریڈی نے کہا کہ چیف منسٹر چندرشیکھر رائو کوایک بار پھر چیف منسٹر کی حیثیت سے موقع فراہم کیا جانا چاہئے تاکہ ریاست میں مزید ترقیاتی کاموں کو انجام دیا جاسکے ۔ وہ ٹی آرایس میں معمولی کارکن کی حیثیت سے کام کریں گے ۔ انہوں نے کہا کہ سینئر قائد ڈاکٹر کیشورائو کی قیادت میں ایک کمیٹی قائم کی گئی ہے اور یہ کمیٹی انتخابی منشور تیار کررہی ہے جس میں ریاست کے عوام کی ضرورتوں کو شامل کیا جائے گا سابق رکن اسمبلی بیگالہ گنیش گپتا نے سریش ریڈی کی ٹی آر ایس میں شمولیت سے ضلع میں پارٹی کو بے حد فائدہ حاصل ہوگا۔ اس موقع پرریڈ کو چیرمین ایس اے علیم ، مئیر آکولہ سجاتا، نوڈا چیرمین پربھا کر ریڈی ، ٹی آرایس قائدین طارق انصاری ، سید مجاہد علی ببو ، اقلیتی سیل کے صدر نوید اقبال ، سمیر احمد کے علاوہ دیگر بھی موجود تھے ۔

جواب چھوڑیں