سابق رکن اسمبلی کونڈا سریکھا کانگریس میں شامل

پردیش کانگریس کو آج اس وقت تقویت ملی جبکہ ٹی آر ایس کی سابق رکن اسمبلی کونڈا سریکھا، اپنے شوہر کونڈا مرلیدھر راؤ کے ہمراہ ، چہارشنبہ کے روز نئی دہلی میں کانگریس میں شامل ہوگئیں۔ ٹی آر ایس کے 119 کے منجملہ105 ، امیدواروں کے ناموں کی فہرست میں اپنا نام شامل نہ ہونے پر کونڈا سریکھا اور کونڈا مرلیدھر راؤ ایم ایل سی نے پارٹی قیادت کو تنقید کا نشانہ بنایا تھا ۔ ان دونوں نے آج نئی دہلی میں راہول گاندھی کی موجودگی میں کانگریس میں شمولیت اختیار کرلی ۔ تحلیل شدہ ریاستی اسمبلی میں وہ، حلقہ ورنگل مشرق سے نمائندگی کرتی تھیں۔ جبکہ ان کے شوہر کونڈا مرلیدھر راؤ، سیٹنگ ایم ایل سی ہیں۔ بعدازاں نئی دہلی میں میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کونڈا سریکھا نے الزام عائد کیا کہ ٹی آر ایس میں انہیں اس لئے حاشیہ پر رکھا گیا کیونکہ چند افراد کو یہ لگا کہ وہ ( سریکھا) پارٹی قیادت سے سوال کرتی ہیں۔ متحدہ ریاست اے پی میں آنجہانی ڈاکٹر راج شیکھر ریڈی کی حکومت میں بحیثیت وزیر کام کرچکی کونڈا سریکھا نے کہا کہ وہ ، کانگریس میں دوبارہ آچکی ہیں ۔ اسی جماعت نے مجھے سیاسی زندگی عطا کی ہے۔ انہوںنے کہا کہ اسمبلی انتخابات میں وہ کانگریس کی کامیابی کیلئے سخت محنت کریں گی ۔ صدر پردیش کانگریس این اتم کمار ریڈی نے اس یقین کا اظہار کیا کہ کونڈا سریکھا اور کونڈا مرلیدھر راؤ کی کانگریس میں واپسی سے ضلع ورنگل کے تمام حلقوں میں پارٹی کو استحکام ملے گا ۔ ریڈی نے مزید کہا کہ راہول گاندھی نے بھی اس امید کا اظہار کیا کہ کونڈا جوڑے کی کانگریس میں دوبارہ واپسی سے پارٹی کو تقویت ملے گی ۔ راج شیکھر ریڈی کی کابینہ میں کونڈا سریکھا کے پاس بہبود خواتین واطفال کا قلمدان تھا تاہم وائی ایس آر کی موت کے بعد جگن کو ریاست کا چیف منسٹر نہ بنائے جانے کے خلاف بطور احتجاج ، انہوں استعفیٰ دے دیا تھا ۔ بعدازاں وہ وائی ایس آر کانگریس پارٹی میں شامل ہوگئی تھیں اور 2014 کے انتخابات میں انہوںنے ٹی آر ایس ٹکٹ پر کامیابی حاصل کی تھی۔یو این آئی کے بموجب سابق وزیر کونڈا سریکھا، چہارشنبہ کو اپنے شوہر کے مرلی ایم ایل سی کے ساتھ نئی دہلی میں کانگریس میں شامل ہوگئیں۔ کونڈا جوڑے نے ، صدر کانگریس راہول گاندھی کی موجودگی میں کانگریس میں شمولیت اختیار کرلی ۔ کونڈا سریکھا، تحلیل شدہ اسمبلی کی رکن تھیں جبکہ ان کے شوہر کونڈا مرلی، ایوان بالا (قانون ساز کونسل) کے موجودہ رکن ہیں۔ کانگریس میں شامل ہونے سے ایک دن قبل منگل کو کونڈا سریکھا نے ریاست کے نگرانکار چیف منسٹر وٹی آر ایس کے سربراہ کے چندر شیکھر راؤ کے نام روانہ کردہ اپنے مکتوب میں اس بات کا اشارہ دے دیا تھا کہ وہ ، ٹی آر ایس چھوڑنا چاہتی ہیں۔ انہوںنے کے سی آر پر سنگین الزامات بھی عائد کئے اور کہا تھا کہ ریاست میں کے سی آر خاندان کی حکمرانی ہے۔ سریکھا نے کہا کہ آنے والے اسمبلی انتخابات میں انہیں ٹکٹ نہ دے کر ٹی آر ایس نے بڑی غلطی کی ہے ۔ کانگریس ذرائع نے بتایا کہ پارٹی نے اس بات کا اشارہ دیا ہے کہ کونڈا سریکھا کو حلقہ ورنگل سے پارٹی امیدوار بنایا جائے گا۔

جواب چھوڑیں