عدالتی کاروائی کی ویڈیو ریکارڈنگ بہتر اقدام : جسٹس ہیگڈے

 سپریم کورٹ کے موظف جج جسٹس این سنتوش ہیگڈے نے چہارشنبہ کے روز کہا کہ عدالتی کاروائی کی لائیو ریکارڈنگ سے راز داری ختم ہوجائے گی اور اس سے عدالتی امور کو مزید شفاف بنایا جاسکے گا اور عدالتوں پر عوام کا اعتماد بڑھے گا۔ میرے خیال میں یہ ایک بہترین اقدام ہے اس لئے کہ اس سے عدالتی امور کو مزید شفاف بنایا جاسکتا ہے۔ پیشہ وکالت سے غیر وابستہ افراد بھی لائیو ویڈیو ریکارڈنگ سے یہ جان پائیں گے کہ اس پیشہ میں آخر کیا ہورہا ہے۔ سابق سالیسٹر جنرل آف انڈیا نے سپریم کورٹ کی جانب سے عدالتوں میں کیسوں کی کاروائی کی ویڈیو ریکارڈنگ کی اجازت دئیے جانے کے بعد پی ٹی آئی سے بات چیت کرتے ہوئے یہ بات کہی ۔ سپریم کورٹ کے احکام کی ستائش کرتے ہوئے جسٹس سنتوش ہیگڈے نے کہا کہ پہلے عوام کو مکمل طور پر اس سے دور رکھا جارہا تھا ۔ عوام، جوابی جرح اور دیگر امور کا مشاہدہ کرنے سے قاصر رہتے تھے۔ انہوں نے کہاکہ بحیثیت مجموعی یہ ایک بہترین اقدام ہے ۔ سابق لوک آیوکت کرناٹک جسٹس سنتوش ہیگڈے نے یہ بات کہی۔ سپریم کورٹ نے چہارشنبہ کو عدالتی امور کی لائیو ریکارڈنگ کی اجازت دینے سے اتفاق کرلیا ہے۔

جواب چھوڑیں