من پریت‘ ایشین چمپئنس ٹرافی میں کپتانی کریں گے

ارجن ایوارڈ سے سرفراز کئے گئے من پریت سنگھ 18 اکتوبر سے عمان کے مسقط میں پانچویں ہیرو ایشین چیمپئنز ٹرافی ہاکی مقابلے میں 18 رکنی ہندوستانی ٹیم کی کپتانی سنبھالیں گے ۔ہاکی انڈیا نے اس ٹورنامنٹ کے لیے آج 18 رکنی ٹیم کا اعلان کیا۔ ہندوستانی ٹیم اس ٹورنامنٹ میں اپنا خطاب کا دفاع کرنے اترے گی ۔ہندوستان نے 2016 میں ملائیشیا کے کونتن میں پاکستان کو تین۔دو سے شکست دے کر خطاب اپنے نام کیا تھا۔ ٹیم کے نائب کپتان چنگلین سانا سنگھ کو سونپی گئی ہے ۔ہندوستانی ٹیم میں تجربہ کار گول کیپر پی آر شر ی جیش شامل ہیں جبکہ نوجوان گول کیپر کرشن بہادر پاٹھک کو بھی ٹیم میں جگہ دی گئی ہے ۔ ڈیفنس میں کوٹھاجیت سنگھ نے ٹیم میں واپسی کی ہے ۔ 20 سال کے ہاردک سنگھ سینئر ٹیم میں اپنا ڈیبیو میچ کھیلیں گے ۔منپریت سنگھ، گرویندر سنگھ، ورون کمار، سریندر سنگھ اور منپریت سنگھ ہندوستان کی دفاعی لائن کو سنبھالیں گے ۔ہندوستان کو حال ہی میں انڈونیشیا میں 18 ویں ایشیائی کھیلوں میں سیمی فائنل میں ہارنے کے بعد کانسی سے اکتفا کرنا پڑا تھا۔ ہندوستانی ٹیم اس مرتبہ اپنے خطاب کا دفاع نہیں کر سکی ہے ۔ اسے سیمی فائنل میں ملائیشیا نے سڈن ڈیتھ میں شکست دی تھی۔من پریت کو منگل کوراشٹرپتی بھون میں ارجن ایوارڈ ملا تھا۔ وہ مڈفیلڈ میں چنگلینسانا، للت کمار اپادھیائے ، نیل کانتا شرما اور سمت کے ساتھ چیلنج سنبھالیں گے ۔ نیل کانتا اور سمت نے بھی ٹیم میں واپسی کی ہے ۔ فارورڈ لائن میں 23 سال کے گرجیت سنگھ کی بھی واپسی ہوئی ہے ۔آکاشدیپ سنگھ، مندیپ سنگھ اور دلپریت سنگھ پر ہندوستان کے خطاب کا دفاع کرنے کی ذمہ داری رہے گی۔کوچ ھریندر سنگھ نے کہا، “ہماری ٹیم میں نوجوان اور تجربہ کار کھلاڑیوں کا بہترین تال میل ہے ۔بھونیشور میں عالمی کپ سے پہلے ہمارے پاس کچھ کھلاڑیوں کو آزمانے کا یہ شاندار موقع ہے ۔مجھے یقین ہے کہ یہ کھلاڑی عمان میں ٹیم کو اچھا نتیجہ دیں گے ۔کھلاڑیوں کے لیے یہ ضروری ہے کہ وہ اپنی حکمت عملی پر ڈٹے رہیں، اچھے نتائج کے ساتھ ایشیائی کھیلوں کی بری یادوں کو پیچھے چھوڑ دیں اور عالمی کپ کی تیاری کریں۔

جواب چھوڑیں