عوام‘ کے سی آر خاندان کی حکمرانی سے بدظن:اتم کمارریڈی

ٹی آر ایس کے سابق ایم ایل اے کے ایس رتنم اور نلگنڈہ ضلع پریشد کے چیرمین بالو نائیک نے آج اپنے سینکڑوں حامیوں کے ہمراہ گاندھی بھون پہنچ کر کانگریس پارٹی میں شمولیت اختیار کی۔ صدر ٹی پی سی سی این اتم کمار ریڈی، قائد اپوزیشن کے جانا ریڈی، سابق وزیر داخلہ سبیتا اندرا ریڈی نے ان قائدین کو کھنڈوا پہناکر ان کا خیر مقدم کیا۔ اس موقع پر اتم کمار ریڈی نے اپنی تقریر میں کہا کہ آئندہ دوماہ، پارٹی قائدین اور کارکنوں کے لئے چیالنج سے بھر پور رہیں گے۔ ان دو ماہ کے دوران کے سی آر کی خاندانی حکمرانی کو شکست دینے اور کانگریس پارٹی کو کامیابی سے ہمکنار کرانے تک چین سے نہ بیٹھیں۔ تلنگانہ کے 4 کروڑ عوام، کے سی آر کی خاندانی حکمرانی کے خاتمہ کے انتظار میں ہیں۔ سماج کے تمام طبقات ٹی آر ایس حکومت سے بیزار ہیں۔ کے سی آر نے سماج کے ہر طبقہ کو دھوکہ دیا ہے۔ اپنی ناکامیوں کو چھپانے اور جوابدہی سے بچنے کے لئے کے سی آر نے عوام پر قبل از وقت انتخابات مسلط کردئے ہیں۔ انہوں نے الزام عائد کیا کہ کے سی آر خاندان ساڑھے چار سالہ دور حکومت میں عوام کی دولت کو لوٹا ہے تاکہ آئندہ انتخابات میں کامیابی کے لئے اس لوٹی ہوئی دولت کا استعمال کیا جاسکے۔ جس کے لئے کے سی آر نے ریاست میں جمہوری اقدار کو پامال کردیا۔ دستور کی خلاف ورزی کرتے ہوئے اپوزیشن جماعتوں کے 25، ارکان کو منحرف کرتے ہوئے اپنی پارٹی میں شامل کرلیا۔ ارکان اسمبلی کومٹ ریڈی وینکٹ ریڈی اور سمپت کمار نے حکومت کے غیر جمہوری اقدام کے خلاف آواز بلند کی تو انہیں اسمبلی کی رکنیت سے غیر قانونی طور پر برطرف کردیا۔ اپوزیشن قائدین جگاریڈی، سری سیلم گوڑ، جی وینکٹ ریڈی کے خلاف جھوٹے مقدمات درج کرتے ہوئے انہیں ہراساں کیا جارہا ہے۔ بی جے پی حکومت سے ساز باز کرتے ہوئے ریونت ریڈی سابق ایم ایل اے کے مکانات پر انکم ٹیکس کے دھاوے کرائے جارہے ہیں اور ان کے خلاف جھوٹے مقدمات درج کرتے ہوئے ان کے حوصلے پست کرنے کی کوشش کی جارہی ہے۔ انہوں نے پارٹی قائدین اور کارکنوں کو مشورہ دیا کہ وہ کے سی آر کے مظالم اور انتقامی کارروائیوں کا سامنا کرنے کے لئے ذہنی طور پر تیار رہیں۔ انہوں نے کہا کہ کے سی آر کے دور حکومت میں 4500 کسانوں نے خودکشی کرلی۔ کے سی آر نے ایک بھی کسان کے مکان پہنچ کر ورثاء کو پرسہ تک نہیں دیا۔ کسانوں کی خودکشی میں تلنگانہ ملک بھر میں سرفہرست ہے۔ اس کے علاوہ شراب کی فروختگی میں بھی تلنگانہ کو نمبرون مقام حاصل ہوا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ٹی آر ایس کے دور میں چیوڑلہ کے ساتھ نا انصافی کی گئی۔ راج شیکھر ریڈی نے چیوڑلہ کو کافی اہمیت دی تھی۔ قبل ازیں آج صبح ہی سے گاندھی بھون میں انتخابی سرگرمیاں عروج پر پہنچ چکی۔ مختلف انتخابی کمیٹیوں کے اجلاس میں شرکت کیلئے قائدین کی آمد و درفت بڑھ چکی ہے۔ اضلاع کے پارٹی قائدین اور ان کے حامیوں کی آمد سے نہ صرف گاندھی بھون کا احاطہ بھر گیا بلکہ گاندھی بھون کے روبرو سڑک کے دونوں جانب گاڑیوں کی پارکنگ سے ٹریفک میں آج دن بھر خلل رہا۔ ٹریفک پولیس کو ٹریفک بحال کرنے میں مشکلات پیش آرہی تھیں۔ روزآنہ گانگریس پارٹی میں شامل ہونے والے قائدین کا سلسلہ جاری ہے۔

جواب چھوڑیں