واجپائی نے راج دھرم کا درس دیا : محمد علی شبیر

کونسل میں قائد حزب اختلاف محمد علی شبیر نے اپنی تقریر میں کہا کہ واجپائی ، اگر چیکہ سنگھ پریوار اور آر ایس یس سے تعلق رکھتے تھے مگر انہوںنے کبھی بھی فرقہ وارانہ خطوط پر تقریر نہیں کی ۔ انہوں نے کہا کہ وہ ، خود عوامی جلسہ میں واجپائی کی تقاریر کو بغور سنا کرتے تھے ۔ نگرانکار چیف منسٹر کے سی آر کی جانب سے پیش کردہ تعزیتی قرار کی تائید کرتے ہوئے محمد علی شبیر نے کہا کہ اٹل بہاری واجپائی کے متعلق نگرانکار چیف منسٹر نے جو باتیں کہی ہیں وہ ، اس سے مکمل طور پر اتفاق کرتے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ گجرات کے فسادات کے بعد واجپائی نے اس وقت کے چیف منسٹر( نریندر مودی ) کو ’’ راج دھرم ‘‘ نبھانے کی ہدایت دی تھی ۔ بی جے پی رکن رامچندر راؤ اور دیگر نے بھی خطاب کیا ۔ چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ نے ایوان میں سابق چیف منسٹر ٹاملناڈو کروناندھی، سابق اسپیکر لوک سبھا سومناتھ چٹر جی ، سابق ایم ایل سی اے پی، این وینوما دھو جو ممتاز ممکری آرٹسٹ تھے ، کے انتقال پرمزیدتین تعزیتی قرار داد یں پیش کیں۔ کے چندر شیکھر راؤ نے نیرلا وینوما دھو کے نام سے ہر سال ممکری ایوارڈ دینے کا اعلان کیا ہے ۔ صدرنشین قانون ساز کونسل سوامی گوڑ نے کہا کہ ارکان کی جانب سے یہ ایوان، اٹل بہاری واجپائی، کرونا ندھی ، سومناتھ چٹرجی اور این وینومادھو کے انتقال پر گہرے دکھ کا اظہار کرتا ہے اور غمزدہ افراد خاندان کے ساتھ دلی ہمدری کا اظہار کرتا ہے ۔ ایوان میں ان قائدین کی یاد میں دو منٹ کی خاموشی بھی منائی گئی ۔

جواب چھوڑیں