وادی کشمیر میں 3 عسکریت پسند اور ایک فوجی ہلاک

 وادی کشمیر میں 3 علیحدہ واقعات میں 3 عسکریت پسند‘ ایک فوجی اور ایک عام شہری ہلاک ہوگیا۔ ضلع اننت ناگ کے ڈورو علاقہ کے موضع قاضی گنڈ میںبندوقوں کی لڑائی میں لشکر طیبہ کا ایک مقامی کمانڈر آصف ملک عرف ابو عکاسہ اور ایک فوجی ہلاک ہوگیا۔ سیکوریٹی فورسس نے اس گاؤں میں عسکریت پسندوں کی نقل و حرکت کی اطلاع ملنے پر محاصرہ کرلیا تھا۔ لشکر طیبہ کمانڈر کی موت کی اطلاع عام ہوتے ہی اننت ناگ ٹاؤن میں ہڑتال کردی گئی۔ ضلع بڈگام کے موضع پنزان میں بندوقوں کی ایک اور لڑائی میں سیکوریٹی فورسس نے 2 عسکریت پسندوں کو ہلاک کردیا تاہم ان کی شناخت نہیں ہوسکی۔ عسکریت پسندوں کے ایک مسجد میں داخل ہونے کے بعد لڑائی شروع ہوئی۔ ایک عہدیدار نے بتایا کہ سیکوریٹی فورسس نے انتہائی احتیاط سے کام لیا تاکہ مسجد کو نقصان نہ پہنچے۔ انہوں نے کہا کہ اس کارروائی کے بعد مقامی شہریوں اور سیکوریٹی عملہ میں جھڑپیں شروع ہوگئیں۔ حکام نے بنی ہال اور بارہمولہ ٹاؤنس کے درمیان ٹرین خدمات معطل کردیں۔ جنوبی کشمیر اور سری نگر میں احتیاطی طورپرموبائل انٹرنیٹ خدمات بھی معطل کردی گئیں۔ سری نگر کے قمرواڑی علاقہ کے نورباغ محلہ میں بندوقوں کی لڑائی میں ایک عام شہری محمد سلیم ملک مارا گیا۔ یہ واقعہ اس وقت پیش آیا جب سیکوریٹی فورسس محاصرہ کررہی تھیں۔ اس واقعہ پر بھی عسکریت پسندوں اور سیکوریٹی فورسس کے درمیان جھڑپیں ہوئیں۔ مہلوک شہری کی عیدگاہ شہیدوں کے قبرستان میں تدفین عمل میں آئی جس میں عوام کی کثیر تعداد شریک تھی۔

جواب چھوڑیں