کانگریس کو اقتدار ملنے پر جی ایس ٹی میں ترمیم : راہول

صدرکانگریس راہول گاندھی نے آج کہا کہ اگر ان کی پارٹی برسراقتدار آتی ہے تو وہ گڈس اینڈ سرویسس ٹیکس(جی ایس ٹی) میں تبدیلیاں لائے گی تاکہ اشیا کے دام کم کئے جاسکیں۔ مدھیہ پردیش میں جہاں انتخابات منعقد ہونے والے ہیں ‘ مختلف مقامات کا دورہ کرنے کے بعد انہوں نے رافیل معاملت کے سلسلہ میں وزیراعظم نریندر مودی پر اپنی تنقیدیں جاری رکھیں اور الزام عائد کیاکہ چوکیدار ‘ چوری میں ملوث ہوا ہے۔ راہول گاندھی نے اس مذہبی ٹاؤن میں مشہور کمٹا ناتھ مندر میں پوجا کے بعد مدھیہ پردیش کے اپنے 2 روزہ دورہ کا آغاز کیا تھا۔ انہوں نے کہا کہ مودی حکومت نے نوٹ بندی اور گبر سنگھ ٹیکس (جی ایس ٹی) کے ذریعہ چھوٹے تاجرین اور ملازمتوں کو تباہ کردیا ہے۔ جیسے ہی ہم برسراقتدار آئیں گے اس گبر سنگھ ٹیکس میں تبدیلیاں کریں گے تاکہ اسے حقیقی ٹیکس بنایا جاسکے۔ ہم اقل ترین شرحوں پر ایک ٹیکس نافذ کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ ملازمتوں کی پیداوار کے لئے تمام تر اختیارات استعمال کئے جائیں گے۔ رافیل معاملت کا ذکر کرتے ہوئے راہول گاندھی نے کہا کہ ہندوستان کے چوکیدار نے چوری کرلی ہے۔ وہ بظاہر مودی کا حوالہ دے رہے تھے جنہوں نے کہا تھا کہ وہ بحیثیت وزیراعظم ملک کے چوکیدار ہیں۔ راہول گاندھی نے کہا کہ جو شخص ملک کا چوکیدار ہونے کا دعویٰ کرتا ہے اس نے خود اپنے ہاتھوں سے رافیل معاملت میں انیل امبانی کی جیب میں 30 ہزار کروڑ روپے ڈالے ہیں۔ کانگریس قائد نے انیل امبانی کو مودی کا دوست قراردیتے ہوئے الزام عائد کیا کہ اس صنعتکار پر 45 ہزار کروڑ روپے کا قرض ہے۔ انہوں نے دعویٰ کیا کہ انیل امبانی نے اب تک ایک بھی طیارہ نہیں بنایا لیکن سرکاری زیرانتظام ہندوستان ایروناٹکس لمیٹڈ(ایچ اے ایل) سے چھین کر انہیں 30 ہزار کروڑ روپے کا کنٹراکٹ دے دیا گیا۔

جواب چھوڑیں