کشمیر میں سیکورٹی فورس کی فائرنگ میں نوجوان ہلاک

سابق وزیروسینئر پیپلز ڈیموکریٹک پارٹی (پی ڈی پی) کے سینئر لیڈر سیدالطاف بخاری اور سی پی آئی ایم لیڈر محمد یوسف تریگامی نے سیکوریٹی فورس کے ہاتھوں کارڈن اینڈ سرچ آپریشن کے دوران ایک نوجوان کی ہلاکت کے واقعہ کی پُر زور مذمت کی۔ یہ واقعہ آج سرینگر کے ڈائون ٹائون میں پیش آیا۔ یہ الزام عائد کیا کہ یہ ایک سفا کانہ قتل ہے۔ بخاری نے کہا کہ ملک کی آپریشن کے دوران ہلاکت جو نور باغ‘ قمروانی علاقہ میں ہوئی جو وحشیانہ جرم ہے جو کسی بھی ترقی یافتہ سماج کیلئے ناقابل قبول ہے۔ انہوں نے غیر جانبدارانہ جانچ کا مطالبہ کیا جو اعلیٰ سطحی ہو تاکہ خاطیوں کو جو اس وحشیانہ قتل میں ملوث ہیں ان کو بُک کرتے ہوئے ان کو انصاف کے دائرہ میں لایا جائے۔ انہوں نے الزام عائد کیا کہ بدقسمتی سے بعض مفادا حاصلہ جو سیکورٹی فورس میں شامل ہیں اس واقعہ سے کافی خوش ہیں اور اس قسم کے واقعات کشمیر میں یکے بعد دیگرے پیش آتے جارہے ہیں۔ ریاست کے دیگر حصہ کی طرح اس قسم کے فورسیس جو معاندانہ عزائم کے ساتھ سرینگر شہر کے امن کو غارت کرنا چاہتے ہیں۔ بخاری نے مزید یہ الزام عائد کیا۔ سابق وزیر نے کہا کہ کشمیر میں انسانی زندگی کو پامال کردیا گیا ہے جو سیکوریٹی افواج کیلئے ایک مشغلا سا بن گیا ہے۔ ایسا معلوم ہوتا ہے کہ معصوم شہریوں کو ہلاک کرنے کا انہیں لائسنس مل گیا ہے جس سے وہ کافی خوش ہوتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ تازہ ترین قمرواری ہلاکت سے یہ واضح ہوتا ہے کہ گورنر ستیہ پال ملک جو کشمیر میں اعتماد قائم کرنا چاہتے ہیں کہ وہ سیکوریٹی افواج سے کہیں کہ اپنی کارروائی کے طریقہ کار کے بارے میں نرمی لائیں۔

جواب چھوڑیں