ہندوستان اور بنگلہ دیش کے درمیان آج ایشیاء کپ فائنل

یو اے ای میں جاری ایشیاء کپ کرکٹ ٹورنامنٹ کا فائنل کل سابق چمپئن ہندوستان اور بنگلہ دیش کے درمیان کھیلا جائے گا۔ بنگلہ دیش نے گذشتہ رات شاندار مظاہرہ کرتے ہوئے ایک اور سابق چمپئن پاکستان کو 37 رن سے شکست دیکر خطابی مقابلہ میں رسائی حاصل کی تھی۔ بنگلہ دیش کی کامیابی میں تجربہ کار بلے باز مشفق الرحیم اور فاسٹ بولر مستفیض الرحمن کا اہم رول رہا۔ رحیم نے شاندار بیاٹنگ کرتے ہوئے 99 رن بنائے تھے جبکہ مستفیض الرحمن نے 4 وکٹس کے ذریعہ ٹیم کو فائنل میں پہنچانے میں اہم رول ادا کیاتھا۔ تاہم بنگلہ دیش کو فائنل سے قبل اس وقت شدید جھٹکا لگا جب اس کے اسٹار آل رائونڈر شکیب الحسن انگلی زخمی ہونے کی وجہ سے ایشیاء کپ سے باہر ہوچکے ہیں۔ بنگلہ دیش کی کارکردگی اس لئے بھی اہمیت کی حامل ہے کیونکہ وہ پہلے ہی اپنے سلامی بلے باز تمیم اقبال کے بغیر کھیل رہی ہے ۔ ہندوستان کے خلاف بہتر مظاہرہ کیلئے خاص طورپر بنگلہ دیش کے اوپنرس کو بہتر مظاہرہ کرنا ہوگا جو ٹیم کو بہتر شروعات دلانے میں ناکام ثابت ہوئے ہیں۔ شکیب کی جگہ ٹیم میں شامل ہونے والے مومن الحق بھی پاکستان کے خلاف ناکام ثابت ہوئے تاہم وہ ایک باصلاحیت کھلاڑی ہیں جو کبھی بھی فام میں آسکتے ہیں۔ دوسری جانب ہندوستانی ٹیم اس وقت کھیل کے تما تینوں شعبوں میں بہترین فام میں ہے اور خطاب کی مضبوط دعویدار بھی ہے۔ ہندوستان کی کامیابی میں خاص طورپر اوپنرس کپتان روہت شرما اور شکھر دھون کا اہم رول رہاہے جنہوں نے ٹیم کو بہتر شروعات فراہم کی ہے۔ دونوں نے پاکستان کے خلاف سنچریاں اسکور کرتے ہوئے اپنے بھرپور فام کا اظہار کیاہے۔ تاہم مڈل آرڈر میں سابق کپتان مہیندر سنگھ دھونی کا ناقص فام ٹیم انڈیا کیلئے پریشانی کا باعث ہے۔ دیگر کھلاڑیوں میں امباٹی رائیڈو‘ کے ایل راہول‘ دنیش کارتک اور کیدار جادھو کو بھی مزید بہتر کھیل پیش کرنا ہوگا۔ بنگلہ دیش کے پاس مہدی حسن کی شکل میں بہترین اسپنر موجود ہے اس لئے روہت شرما کے کھلاڑی انہیں کسی بھی حال آسان نہیں لے سکتے جبکہ پاکستان کو شکست دینے کے باعث ان کے حوصلے بھی کافی بلند ہیں۔ بولنگ کے شعبہ میں بمراہ اور بھونیشور کمار کی جبکہ بیاٹنگ کے شعبہ میں روہت شرما اور شکھر دھون کی واپسی ہوگی جو افغانستان کے خلاف میاچ میں آرام کی غرض سے ٹیم سے باہر تھے۔ بہرحال کل ہندوستان اور بنگلہ دیش کے درمیان ایک دلچسپ مقابلہ دیکھنے کو مل سکتاہے جو ہندوستانی معیاری وقت کے مطابق شام 5 بجے سے کھیلا جائے گا۔

جواب چھوڑیں