اسرائیل کی جانب سے حزب اللہ کے میزائل منصوبے کی تصاویر جاری

اسرائیلی فوج نے ایک وڈیو کلپ اور بعض تصاویر جاری کی ہیں جن کے بارے میں اس کا دعوی ہے کہ یہ لبنان میں وہ مقامات ہیں جہاں حزب اللہ تنظیم میزائلوں کی تیاری میں مصروف ہے۔ان تصاویر کا اجرا اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی میں اسرائیلی وزیراعظم بن یامین نیتن یاہو کے اس اعلان کے چند منٹ بعد کیا گیا جس میں بتایا گیا تھا کہ اسرائیل کے پاس اس بات کے ثبوت موجود ہیں کہ ایران ، حزب اللہ کے میزائلوں کو درست نشانے والا بنانے کے سلسلے میں مدد فراہم کر رہا ہے۔ نیتن یاہو نے حزب اللہ پر الزام عائد کیا کہ وہ بیروت میں شہریوں کی زندگی کو خطرے میں ڈال رہی ہے اور انہیں انسانی ڈھال بنا رہی ہے۔ نیتن یاہو نے انکشاف کیا کہ “بیروت انٹرنیشنل ایئرپورٹ کے اطراف حزب اللہ کے زیر انتظام میزائلوں کی تیاری کے کارخانے موجود ہیں۔ پہلا مقام ساحل کے نزدیک الاوزاعی کے علاقے میں رن سے تھوڑی دور واقع ہے۔ دوسرا مقام فٹبال گراؤنڈ کے ایک جانب اور تیسرا مقام بالکل ایئرپورٹ سے متصل ہے۔ حزب اللہ کے لیے اسرائیل کا پیغام ہے کہ ہم جانتے ہیں کہ تم لوگ کیا کر رہے ہواور کہاں کر رہے ہو۔ اسرائیل تم لوگوں کو سزا کے بغیر بچ کر نہیں جانے دے گا”۔ نیتن یاہو کے مطابق ایران نے لبنان میں حزب اللہ کو ہدایت دی کہ نشانے کی عدم درستی والے میزائلوں کو انتہائی درست نشانے کی صلاحیت کا حامل بنانے کے لیے خفیہ ٹھکانے تیار کیے جائیں۔ تبدیلی کے بعد یہ میزائل اسرائیل کے اندر دس میٹر کی درستی کی سطح تک اہداف کو نشانہ بنا سکیں گے۔ اسرائیل نے جمعرات کے روز پانچ تصاویر اور ایک وڈیو کلپ جاری کیا۔ وڈیو کلپ کا دورانیہ 76 سیکنڈوں کا ہے۔ ان میں “میزائلوں کے نشانے کی درستی” کے منصوبے کا انکشاف کیا گیا ہے۔ منصوبے کے بارے میں اسرائیل کا کہنا ہے کہ حزب اللہ نے اسے بیروت کے قلب میں منتقل کرنے کی کوشش کی ہے۔

جواب چھوڑیں