انڈونیشیاء کے جزیرہ سولا ویسی میں زلزلہ کے بعد سونامی

انڈونیشیاء کا جزیرہ سولاویسی آج طاقتور زلزلوں سے دہل کر رہ گیا۔ کئی مکانات تباہ ہوگئے اور کم ازکم ایک فرد کی ہلاکت واقع ہوگئی۔ ایک عہدیدار نے بتایا کہ کافی زیادہ نقصان کا اندیشہ ہے اور عوام پر زور دیا کہ وہ زودار مابعد زلزلہ کے جھٹکوں کے خطرہ کے باعث گھروں کے باہر رہیں۔ امریکی جیالوجیکل سروے میں بتایا کہ 7.5 شدت کا حامل طاقتور ترین زلزلہ آیا اور اس کا مرکز وسطی سولاویسی ٹائون ڈونگالہ کے شمال مشرق میں 56 کیلو میٹر دور 6 میل گہرائی میں تھا۔ اس کے باعث کچھ دیر کیلئے سونامی کی وارننگ جاری کردی گئی۔ آفات سے نمٹنے والی مقامی ایجنسی کے عہدیدار نے کہا ’’کئی مکانات منہدم ہوگئے‘‘۔ انہوں نے اے پی کو بتایا ’’یہ ایک ایسے وقت ہوا جبکہ ہم ابھی پہلے زلزلہ سے متاثرہ نومواضعات سے تفصیلات حاصل کرنے میں مشکلات محسوس کررہے تھے‘‘۔ آفات سے نمٹنے والی قومی ایجنسی کی جانب سے جاری کردہ ٹیلی ویژن فوٹیج میں بتایا گیا ’’لوگ خوف و دہشت کے عالم میں بھاگ رہے ہیں۔ خواتین اور بچے چیخ وپکار کررہے ہیں‘‘ آفات سے نمٹنے والی ایجنسی کے ترجمان نے بتایا کہ علاقہ میں مواصلاتی نظام متاثر ہوگیا۔ انہوں نے کہا کہ علاقہ ڈونگالہ میں جہاں 3 لاکھ افراد رہتے ہیں زیادہ نقصان ہوا ۔ علاقہ میں بار بار طاقتور مابعد زلزلہ کے جھٹکے محسوس ہوئے جن میں 6.7 شدت کا حامل زلزلہ بھی شامل ہے۔ ترجمان نے بتایا ’’عوام کو چوکس رہنے کا مشورہ دیا گیا ہے اور انہیں محفوظ مقامات کو منتقل کیا جارہا ہے۔ عوام سے کہا گیا ہے کہ وہ پہاڑیوں کے دامن میں رہنے سے احتراز کریں‘‘۔ ایرنائو نے جو انڈونیشیاء میں ایرلائن ٹریفک کی نگرانی کرتی ہے اس کی جانب سے جاری کردہ نوٹس میں بتایا گیا کہ نقصان کے باعث وسطی سولا ویسی کے دارالحکومت پالو میں طیاروں کی آمد و رفت کو 24 گھنٹوں کیلئے رک دیا گیا۔رات دیر گئے موصولہ اے ایف پی کی اطلاع میں بتایا گیا کہ وسطی انڈونیشیاء میں طاقتور زلزلہ کی وجہ سے آج سونامی آگئی اور اس میں جزیرہ سولا ویسی کے ایک شہر کو نشانہ بنایا۔ عہدیدار نے کہا کہ زلزلہ کی وجہ سے کئی عمارات زمین دوز ہوگئیں۔

جواب چھوڑیں