ایپّا مندر میں 10 تا 50 برس کی عورتوں کو داخلہ کی اجازت

 سپریم کورٹ نے جمعہ کے دن کیرالا میں بھگوان ایپّا کے شبری ملا مندر کے دروازے 10 تا 50 برس کی عورتوں کے لئے کھول دیئے ۔ اس نے کہا کہ عورتوں کا داخلہ ممنوع قراردینا ان کے بنیادی حقوق اور دستوری ضمانت کی خلاف ورزی ہے۔ 4:1 کے اکثریتی فیصلہ میں کیرالا کے امتناعی قوانین کا حوالہ بھی دیا گیا۔ جسٹس اندو ملہوترہ نے جو 5 رکنی بنچ میں واحد خاتون جج تھیں‘ اختلافی فیصلہ دیا۔ چیف جسٹس دیپک مشرا نے اپنی اور جسٹس اے ایم کھنولکر کی طرف سے فیصلہ پڑھ کرسنایا۔ انہوں نے کہا کہ تمام یاتری/ بھکت برابر ہیں اور صنف کی بنیاد پر بھیدبھاؤ نہیں کیا جاسکتا۔ جسٹس آر ایف نریمان نے علیحدہ لیکن متوازی فیصلہ دیا۔ جسٹس ڈی وائی چندرچوڑ نے بھی علیحدہ فیصلہ دیا لیکن انہوں نے اختلاف نہیں کیا۔ جسٹس اندو ملہوترہ نے اپنے اختلافی نوٹ میں لکھا کہ مذہب کا لازمی رواج کیا ہے یہ عبادت گذاروں کو طے رنے دینا چاہئے۔

جواب چھوڑیں