سشما سوراج نے شاہ محمود قریشی کو نظرانداز کردیا

ہندوستانی وزیر خارجہ سشما سوراج نے یہاں ساؤتھ ایشین اسوسی ایشن فار ریجنل کوآپریشن (سارک) وزرائے خارجہ اجلاس میں وزیر خارجہ پاکستان شاہ محمود قریشی کو نظرانداز کردیا۔ دہشت گردی کے ایکو سسٹم کے خاتمہ کا مطالبہ کرنے کے بعد وہ فوری اجلاس سے باہر نکل گئیں۔ ہندوستان نے دونوں وزرا کی نیویارک میں ملاقات پر پہلے حامی بھری تھی اور بعد میں انکار کردیا تھا اس پس منظر میں جمعرات کے دن سارک اجلاس پر سب کی نظر تھی۔ دونوں وزرا قریب قریب موجود تھے لیکن سشما نے قریشی کو نظرانداز کیا۔ انہوں نے اس وارننگ کے ساتھ تقریر کی کہ دہشت گردی‘ ہمارے خطہ میں بلکہ دنیا کے لئے امن اور استحکام کے لئے واحد بڑا خطرہ ہے۔ قریشی کی تقریر سے قبل وہ ہوٹل ویسٹن گرانڈ چلی گئیں۔ قریشی نے بعدازاں سشما پر طنز کیا اور سماء ٹی وی کے بموجب انہوں نے پاکستانی میڈیا سے کہا کہ شاید ان کی (سشما) طبیعت ٹھیک نہیں۔ سارک اجلاس سے خطاب میں سشما نے پاکستان کا نام نہیں لیا۔ قریشی نے تاہم ہندوستان پر سارک کی راہ روکنے عائد کیا ۔ انہوں نے کہا کہ سشما سوراج نے علاقائی تعاون کی بات کی ہے لیکن باہمی تعاون کیسے ہوگا جب خطہ کے ممالک بات چیت کے لئے بیٹھنے کو تیار ہیں اور آپ ایسی بات چیت میں روڑے اٹکارہے ہیں۔

جواب چھوڑیں